وزارت خزانہ نے سرکاری ملازمین کی ریٹائرمنٹ کی عمر عارضی طور پر 60 سال سے بڑھا کر 62 سال کر دی

اسٹیبلشمنٹ ڈویژن نے وزارت خزانہ کی 3 نکاتی سمری کی منظوری دے دی ہے جس میں گزشتہ تین سال کی سروس میں ملنے والی تنخواہ کی بنیاد پر پنشن کا حساب لگانے اور قبل از وقت ریٹائر ہونے والوں کی پنشن میں 3 فیصد کمی کی تجاویز شامل ہیں۔  تاہم ان تجاویز کو یکسر مسترد کر دیا گیا ہے۔

خزانے پر پڑنے والے مالی بوجھ کو عارضی طور پر کم کرنے کے لیے سرکاری ملازمین کی ریٹائرمنٹ کی عمر عارضی طور پر 60 سال سے بڑھا کر 62 سال کر دی گئی ہے۔  یہ فیصلہ ادائیگیوں کا مؤثر طریقے سے انتظام کرنے کے لیے کیا گیا ہے۔

مزید آگے بڑھنے کے لیے وزارت خزانہ حتمی منظوری کے لیے سمری وفاقی کابینہ کو پیش کرے گی۔  اس سے قبل وزارت اسٹیبلشمنٹ ڈویژن کی جانب سے جاری دفتری میمورنڈم پر وزارت قانون اور ای سی سی سے منظوری لے گی۔