قرض میں ڈوبے ملک میں نئے اراکین اسمبلی کے لیے مراعات کی بارش، پوری فیملی کے لیے نیلا پاسپورٹ جاری کیا جائے گا

پاکستان کی 16ویں قومی اسمبلی کے ارکان کے لیے آسانیاں پیدا کرنے کے لیے پارلیمنٹ ہاؤس میں ایک سہولت سینٹر قائم کیا گیا ہے۔  نومنتخب اراکین نے آمد شروع کر دی ہے اور وہ اپنے اسمبلی کارڈ اور دیگر مراعات حاصل کرنے کے لیے اپنی تفصیلات بھر رہے ہیں۔

نئے اراکین کا پرتپاک استقبال کرنے کے لیے سپیکر قومی اسمبلی راجہ پرویز شرف نے خیرمقدمی بینرز لگا دیے ہیں۔  مزید برآں، پارلیمنٹ ہاؤس کے کمیٹی روم نمبر دو میں ایک آسان سہولت مرکز قائم کیا گیا ہے۔  یہاں اراکین قومی اسمبلی کے قواعد و ضوابط پر مشتمل اپنی تصاویر لے سکتے ہیں اور ایک کتابچہ وصول کر سکتے ہیں۔

مزید برآں، نئے اراکین کو مطلع کیا جا رہا ہے کہ انہیں ان کی شریک حیات، والدین اور 28 سال سے کم عمر کے غیر شادی شدہ بچوں کے لیے نیلے رنگ کے پاسپورٹ جاری کیے جائیں گے۔ یہ پاسپورٹ انہیں 46 ممالک میں بغیر ویزے کے سفر کرنے کی اجازت دیں گے۔  تاہم، نیلے رنگ کے پاسپورٹ کے حصول کے لیے انہیں حلف اٹھانا پڑتا ہے۔  اراکین کو اپنے بینک اکاؤنٹس کی تفصیلات بھی کاؤنٹرز پر فراہم کرنے کی ضرورت ہے، جہاں وہ اپنی تنخواہ اور دیگر مراعات حاصل کریں گے۔

پنجاب کی 25 رکنی صوبائی کابینہ کے ممکنہ امیدواروں کے نام سامنے آ گے

پارلیمانی اجلاس میں، وہ سوال کر رہے ہیں کہ وہ پارلیمنٹ کے چار فورمز میں سے کس کا حصہ بننا پسند کریں گے: خواتین کے حقوق، بچوں کے حقوق، نوجوانوں کی بہبود، یا SDGs۔

اس مرکزی سہولت پر ایک بین الاقوامی تعلقات کا ڈیسک قائم کیا گیا ہے جہاں نئے آنے والوں سے ان کی ذاتی معلومات، سیاسی تعلقات، تعلیمی پس منظر اور غیر ملکی سفر کے تجربات کے بارے میں دریافت کیا جا رہا ہے۔

اپنے انتخابی اعلان کے مطابق ن لیگ عوام کو کب مفت بجلی دے گی عظمی بخاری نے بتا دیا