پنجاب کی 25 رکنی صوبائی کابینہ کے ممکنہ امیدواروں کے نام سامنے آ گے

ابتدائی مرحلے کے دوران، مسلم لیگ (ن) اور اس کی اتحادی جماعتیں 25 رکنی صوبائی کابینہ پر مشتمل افراد کا تعین کرنے کے لیے مشاورت اور غور و خوض میں مصروف ہیں۔

توقع ہے کہ مسلم لیگ (ن) 22 وزراء نامزد کرے گی جب کہ کیو ایل اور آئی پی پی بالترتیب 2 اور 1 وزیر کا حصہ ڈالے گی۔  صوبائی کابینہ کے لیے مسلم لیگ ن کی جانب سے ممکنہ امیدواروں میں مریم اورنگزیب، خواجہ سلمان رفیق، خواجہ عمران نذیر، بلال یاسین، میاں مجتبیٰ شجاع الرحمان اور فیصل کھوکھر شامل ہیں۔  اس کے علاوہ رانا محمد اقبال، سردار خضر حسین مزاری، منشاء اللہ بٹ، عاشق کرمانی، نعیم خان بھابھہ اور عظمی بخاری کو بھی شامل کرنے پر غور کیا جا سکتا ہے۔

ایم کیو ایم پاکستان کا وزیراعلیٰ سندھ کے لیے اپنا امیدوار نامزد کرنے کا فیصلہ

صوبائی کابینہ کے ممکنہ امیدواروں میں سردار شیر علی گورچانی، احمد خان لغاری، سبطین بخاری، کرنل ریٹائرڈ محمد ایوب خان گادھی، اختر بوسال اور میاں یاور زمان شامل ہیں۔  مزید برآں جاوید اور شیخ سلمان نعیم کو بھی شامل کیے جانے کا امکان ہے۔

مذکورہ افراد کے علاوہ خرم خان ورک، نواز چوہان، اور عمران خالد بٹ کو کابینہ میں شامل کرنے پر غور کیا جا رہا ہے۔

استحکام پاکستان پارٹی سے تعلق رکھنے والے ملک غضنفر عباس چھینہ کو ممکنہ صوبائی کابینہ میں شامل کیے جانے کا امکان ہے جب کہ ق لیگ کے چوہدری شفیع حسین کو بھی کوئی عہدہ مل سکتا ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ پہلے مرحلے کے لیے صوبائی کابینہ کو حتمی شکل دینے کا فیصلہ مریم نواز کے وزیر اعلیٰ منتخب ہونے کے ساتھ ہی ہوگا۔

اپنے انتخابی اعلان کے مطابق ن لیگ عوام کو کب مفت بجلی دے گی عظمی بخاری نے بتا دیا

وفاق میں مسلم لیگ ن اور پیپلز پارٹی کی حکومت ہوتے ہوۓ خیبر پختونخوا میں پی ٹی آئی کو کیا مشکلات ہو سکتی ہے