امریکہ کوئی پابندی نہ لگائے تو پاکستان نے ایران گیس پائپ لائن منصوبے کو دو مرحلوں میں مکمل کرنے کا فیصلہ کر لیا

پاکستان نے ایران گیس پائپ لائن منصوبے کو دو مرحلوں میں مکمل کرنے کا فیصلہ کیا ہے جس کے پہلے مرحلے میں گوادر سے ایران سرحد تک پائپ لائن کا 81 کلومیٹر حصہ بچھایا جائے گا۔  یہ اقدام اس اہم منصوبے کے تئیں اسلام آباد کے حکام کی سنجیدگی کو ظاہر کرتا ہے۔

فوج کاروباری منصوبوں میں مشغول ہونے کے بجائے صرف دفاعی کام پر توجہ مرکوز کرے۔چیف جسٹس قاضی فائز عیسیٰ

مزید برآں، پاکستان کو اس منصوبے کی منظوری مل گئی ہے، جسے بعد کے مراحل میں نواب شاہ سے منسلک کر دیا جائے گا۔  ایران نے پاکستان کے لیے ستمبر 2024 کی ڈیڈ لائن میں توسیع کرتے ہوئے پیٹرولیم ڈویژن کو پائپ لائن کے لیے وفاقی کابینہ سے انتظامی منظوری لینے کا موقع دیا ہے۔  وزارت خزانہ جی آئی ڈی سی کا بورڈ ضروری فنڈنگ ​​کا بھی انتظام کرے گا۔

اس منصوبے میں گوادر کو 81 کلومیٹر طویل پائپ لائن کے ذریعے آئی پی گیس لائن منصوبے سے منسلک کرنا ہے، گوادر میں گیس کے ابتدائی استعمال کے ساتھ۔  اگر امریکہ نے کوئی پابندی نہ لگائی تو پائپ لائن کو گوادر سے نواب شاہ سندھ تک بڑھایا جائے گا۔  تاہم، اگر واشنگٹن کی جانب سے پابندیاں لگائی جاتی ہیں، تو پاکستان کے پاس اس منصوبے کو ترک کرنے اور 18 بلین ڈالر کے جرمانے اور ثالثی عدالت کی کارروائی سے بچنے کی معقول وجوہات ہوں گی۔

یہ بات قابل غور ہے کہ ایران نے طویل عرصے سے تاخیر کا شکار آئی پی گیس پائپ لائن منصوبے کے لیے اپنی وابستگی کو اجاگر کرتے ہوئے پاکستان کی ڈیڈ لائن کو ستمبر 2024 تک بڑھا دیا ہے۔  اگر اسلام آباد کے حکام مثبت جواب دینے میں ناکام رہے تو تہران پیرس میں قائم بین الاقوامی ثالثی کے ذریعے 18 بلین ڈالر کے جرمانے کا مطالبہ کرے گا۔

چیف جسٹس قاضی فائز عیسیٰ اور متروکہ وقف املاک بورڈ کے وکیل اکرام چوہدری کے درمیان تلخ کلامی ہو گئ

مزید برآں، ایران نے پاکستان کو اپنی قانونی اور تکنیکی مہارت کی پیشکش کی ہے، جس میں 180 دن کی ڈیڈ لائن ختم ہونے سے پہلے جیت کی صورتحال کو یقینی بنانے کے لیے باہمی تعاون کی حکمت عملی کی تجویز پیش کی ہے۔  یہ نقطہ نظر ممکنہ طور پر ثالثی سے بچ سکتا ہے اور پاکستان کو ایران پر امریکی پابندیوں کے منفی اثرات سے بچا سکتا ہے۔

محکمہ اوقاف سندھ نے سینئر اداکار مصطفی قریشی سے قبر کے لیے کتنے لاکھ روپے مانگ لیے

بینظیر انکم سپورٹ پروگرام کے وظیفہ کی رقم میں اضافہ کر دیا گی