الیکشن میں اچھے نتائج کے بعد عمران خان اور شاہ محمود قریشی کے لیے عدالت کی طرف سے ایک اور اچھی خبر آگئی

پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے بانی عمران خان اور شاہ محمود قریشی کی راولپنڈی کی انسداد دہشت گردی کی عدالت نے ضمانت منظور کر لی ہے۔  یہ فیصلہ انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت کے جج ملک اعجاز آصف نے سنایا۔  یہ ضمانتیں 9 مئی کو پیش آنے والے واقعات سے منسلک 12 مقدمات میں دی گئیں۔واضح رہے کہ عمران خان اور شاہ محمود قریشی کے خلاف یہ مقدمات راولپنڈی کے مختلف تھانوں میں درج ہیں۔

الیکشن نتائج کے بعد مصنوعی ذہانت پر مبنی عمران خان کا ویڈیو پیغام آ گیا

گزشتہ سال عمران خان کو القادر ٹرسٹ کیس میں اسلام آباد ہائی کورٹ کے احاطے سے گرفتار کیا گیا تھا جس کے بعد پی ٹی آئی کی جانب سے ملک گیر احتجاج کیا گیا تھا۔  بدقسمتی سے ان مظاہروں کے دوران 9 مئی کو لاہور کے علاقے ماڈل ٹاؤن میں جانی نقصان ہوا تھا۔ احتجاج کے نتیجے میں لیگ (ن) کے دفتر کو نذر آتش کیا گیا اور فوجی، سول اور نجی تنصیبات کو تباہ کیا گیا۔  متعدد سرکاری اور نجی املاک کو شدید نقصان پہنچا، اور افسوسناک بات یہ ہے کہ آٹھ افراد اپنی جانوں سے ہاتھ دھو بیٹھے جبکہ 290 دیگر زخمی ہوئے۔

مزید برآں، مظاہرین نے لاہور میں کور کمانڈر کی رہائش گاہ پر بھی دھاوا بول دیا، جسے جناح ہاؤس کہا جاتا ہے، اور راولپنڈی میں جنرل ہیڈ کوارٹرز (جی ایچ کیو) کا ایک گیٹ توڑ دیا۔  نتیجے کے طور پر، ملک بھر میں لڑائی، توڑ پھوڑ اور آتش زنی میں ملوث تقریباً 1,900 افراد کو گرفتار کیا گیا۔  اس کے علاوہ عمران خان کے ساتھ ساتھ ان کی پارٹی کے رہنماؤں اور کارکنوں کے خلاف بھی مقدمات درج کیے گئے۔

قید با مشقت میں عمران خان کو کام سونپ دیا گیا

جیل کے اندر مر جاؤں گا، ڈیل نہیں کروں گا، عدت میں نکاح کے کیسں کے فیصلے کے بعد عمران خان کا بیان آگیا