رات گئے آصف علی زرداری اور شہباز شریف کی ملاقات،مرکز اور پنجاب میں مخلوط حکومت بنانے پر اتفاق

پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین آصف علی زرداری نے مسلم لیگ (ن) کے مرکزی صدر شہباز شریف سے رات گئے نگراں وزیراعلیٰ محسن نقوی کی رہائش گاہ پر اہم ملاقات کی۔  ملاقات کے دوران دونوں جماعتوں نے مرکز اور پنجاب میں مخلوط حکومت بنانے پر اتفاق کیا اور سیاسی اور معاشی استحکام کے لیے بھی تعاون کرنے کا فیصلہ کیا۔

ملاقات میں بلاول بھٹو اور فریال تالپور نے شرکت کی۔  آئندہ اجلاس میں باہمی مشاورت سے تمام معاملات کو حتمی شکل دی جائے گی۔  آصف زرداری کو شہباز شریف کے ذریعے پارٹی قائد نواز شریف کا پیغام ملا۔  اس سے قبل شام کو نواز شریف نے ماڈل ٹاؤن میں پارٹی کارکنوں سے خطاب کرتے ہوئے تمام سیاسی جماعتوں اور آزاد امیدواروں سے ملک کی بہتری کے لیے اکٹھے ہونے کی خواہش کا اظہار کیا، کیونکہ پارٹی کو اکثریت حاصل نہیں تھی۔

الیکشن 2024 کے ناقابل یقین اپ سیٹ

دوسری جانب تحریک انصاف کے رہنما بیرسٹر گوہر علی خان نے دعویٰ کیا کہ ان کے پاس 150 نشستوں کی اکثریت ہے اور وفاق، پنجاب اور کے پی کے میں حکومت بنائیں گے۔  پی ٹی آئی کے مرکزی سیکرٹری اطلاعات نے اس بات پر زور دیا کہ انتخابی نتائج میں رد و بدل کی کسی بھی کوشش کے سنگین نتائج برآمد ہوں گے۔

بیرسٹر گوہر علی خان نے یہ بھی بتایا کہ وزیراعظم سے متعلق ابھی فیصلہ نہیں ہوا۔  انہوں نے کہا کہ مخصوص نشستوں کے لیے پارٹی میں شامل ہونا ضروری ہے، اور پی ٹی آئی میں رہنے یا دوسری پارٹی میں شمولیت کا فیصلہ کرنے کے لیے دو ہفتے کا وقت ہے۔

بیرسٹر گوہر علی خان نے زور دے کر کہا کہ کسی بھی سیاسی جماعت سے اتحاد کرنے کا فیصلہ ابھی باقی ہے۔  شفافیت کو یقینی بنانے کے لیے انٹرا پارٹی الیکشن کرائے جائیں گے اور اس حوالے سے نوٹیفکیشن بھی جاری کر دیا گیا ہے۔  انہوں نے امید ظاہر کی کہ انتخابی نتائج صبح 10 بجے سے پہلے دستیاب ہوں گے، اور پارٹی پارلیمنٹ میں جگہ حاصل کرنے کی کوشش کرے گی۔  مزید برآں، انہوں نے اس بات پر روشنی ڈالی کہ تمام چیلنجز اور مسائل کو پارلیمانی ذرائع سے حل کیا جائے گا، اور پارٹی جمہوریت کو فروغ دینے اور معیشت کو مضبوط بنانے کے لیے تمام اسٹیک ہولڈرز کے ساتھ مل کر کام کرنے کے لیے پرعزم ہے۔  بیرسٹر گوہر علی خان نے یہ بھی کہا کہ پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ (ن) آپس میں اتحاد نہیں کر سکتے، دیگر سیاسی جماعتوں کے ساتھ مل کر پارٹی کے اندر اتحاد کو فروغ دینے کے لیے متبادل آپشنز تلاش کیے جائیں گے۔

تحریک لبیک پاکستان نے ملک بھر میں احتجاج کا اعلان کر دیا

عام انتخابات کے نتائج آنے پر سٹاک ایکسچینج میں شدید مندی سرمایہ کاروں کے کھربوں روپے ڈوب گے

آزاد امیدوار کس پارٹی میں شامل ہو گے،بڑی خبر آگئ

پاکستان میں آزاد امیدواروں کی اکثریتی کامیابی پر امریکی محکمہ خارجہ کے ترجمان کا ردعمل آگیا