الیکشن 2024 کے ناقابل یقین اپ سیٹ

الیکشن 2024 میں کئی اہم حلقوں میں حیران کن نتائج سامنے آئے ہیں۔  قابل ذکر ہے کہ مسلم لیگ ن کے قائد نواز شریف اور جے یو آئی کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کو غیر متوقع شکست کا سامنا کرنا پڑا۔

مانسہرہ کے حلقہ این اے 15 میں غیر سرکاری غیر حتمی نتائج کے مطابق آزاد امیدوار شہزادہ گستاخ خان نواز شریف پر براجمان ہو گئے۔  شہزادہ گستاخ خان نے ایک لاکھ ووٹ حاصل کیے جب کہ نواز شریف 80 ہزار ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر رہے۔

اسی طرح این اے 44 میں آزاد امیدوار علی امین گنڈا پور نے جمعیت علمائے اسلام کے رہنما مولانا فضل الرحمان کو شکست دی۔  علی امین گنڈا پور نے 92,612 ووٹ حاصل کیے جب کہ مولانا فضل الرحمان نے 59,364 ووٹ حاصل کیے۔

تحریک لبیک پاکستان نے ملک بھر میں احتجاج کا اعلان کر دیا

لیگی رہنما جاوید لطیف کو این اے 115 شیخوپورہ میں آزاد امیدوار خرم شہزاد سے شکست کا سامنا کرنا پڑا۔  خرم شہزاد نے 126,349 ووٹ حاصل کیے اور جاوید لطیف کے 88,125 ووٹوں کو پیچھے چھوڑ دیا۔

این اے 121 لاہور میں مسلم لیگ ن کے سینئر رہنما شیخ روحیل اصغر کی شکست دیکھی گئی، جنہیں پی ٹی آئی کے حمایت یافتہ آزاد امیدوار وسیم قادر نے چیلنج کیا تھا۔  روحیل اصغر نے 70,597 ووٹ حاصل کیے جب کہ وسیم قادر نے 78,703 ووٹ حاصل کیے۔

این اے 2 سوات میں مسلم لیگ ن کے امیر مقام کو آزاد امیدوار ڈاکٹر امجد خان کے ہاتھوں شکست کا سامنا کرنا پڑا۔  امیر مقام نے 29,240 ووٹ حاصل کیے جبکہ ڈاکٹر امجد نے 43,140 ووٹ حاصل کیے۔

مزید برآں استحکام پاکستان پارٹی کے رہنما جہانگیر خان ترین کو غیر حتمی اور غیر سرکاری نتائج کے مطابق این اے 149 ملتان میں آزاد امیدوار عامر ڈوگر سے شکست کا سامنا کرنا پڑا۔  جہانگیر ترین کو صرف 50,166 ووٹ ملے جبکہ عامر ڈوگر 163,613 ووٹ لے کر کامیاب ہوئے۔

عام انتخابات کے نتائج آنے پر سٹاک ایکسچینج میں شدید مندی سرمایہ کاروں کے کھربوں روپے ڈوب گے

این اے 6 لوئر دیر میں جماعت اسلامی کے امیر سراج الحق کو آزاد امیدوار محمد بشیر خان سے شکست کا سامنا کرنا پڑا۔  محمد بشیر خان نے 81,060 ووٹ حاصل کیے جب کہ سراج الحق صرف 56,538 ووٹ حاصل کر سکے۔

این اے 122 میں ایک اور اہم اپ سیٹ ہوا جہاں پی ٹی آئی کے حمایت یافتہ آزاد امیدوار سردار لطیف کھوسہ نے مسلم لیگ ن کے رہنما خواجہ سعد رفیق کو شکست دی۔  سردار لطیف کھوسہ 117109 ووٹ لے کر کامیاب ہوئے جبکہ سعد رفیق کو 77907 ووٹ ملے۔

سیالکوٹ کے حلقہ این اے 71 میں عام انتخابات کے دوران ایک اور اہم اپ سیٹ سامنے آیا ہے۔  عثمان ڈار کی والدہ اور پی ٹی آئی کی حمایت یافتہ ریحانہ امتیاز ڈار کو غیر حتمی اور سرکاری نتائج کے مطابق سینئر لیگی رہنما خواجہ آصف نے شکست دی ہے۔  ریحانہ امتیاز ڈار نے مجموعی طور پر 131,615 ووٹ حاصل کیے جب کہ مسلم لیگ ن کے خواجہ آصف 82,615 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر رہے۔  خیال رہے کہ اس سے قبل ریحانہ ڈار سیالکوٹ سے کامیاب ہوئی تھیں تاہم اس بار مسلم لیگ ن کے خواجہ آصف فاتح قرار پائے ہیں۔

آزاد امیدوار کس پارٹی میں شامل ہو گے،بڑی خبر آگئ

پاکستان میں آزاد امیدواروں کی اکثریتی کامیابی پر امریکی محکمہ خارجہ کے ترجمان کا ردعمل آگیا

قومی اور صوبائی اسمبلیوں میں کتنی مخصوص نشستیں ہے اور انہیں کس فارمولے پر پارٹیوں کو دیا جاتا ہے