پرچون فروش ہو جائے تیار، نگراں حکومت نے لاکھوں پرچون فروشوں کو ٹیکس کے نظام میں لانے کے لیے سکیم تیار کر لی

نگراں حکومت نے لاکھوں خوردہ فروشوں کو ٹیکس کے نظام میں شامل کرنے کے اپنے منصوبے کو حتمی شکل دے دی ہے اور اس کا اعلان کسی بھی وقت کیا جا سکتا ہے۔

ایف بی آر کے ذیلی ادارے پاکستان ریونیو اتھارٹی لمیٹڈ نے ‘تاجر دوست’ کے نام سے ایک موبائل ایپ تیار کی ہے، جو تمام خوردہ فروشوں اور تاجروں کے لیے قومی کاروبار کی رجسٹری کا کام کرتی ہے۔  پہلے سے رجسٹرڈ افراد کے نام صارف دوست ڈیٹا بیس میں درج کیے جائیں گے۔

خوردہ کاروبار کی مناسب دستاویزات کو یقینی بنانے اور انکم ٹیکس گوشوارے جمع کرانے کی حوصلہ افزائی کے لیے، یہ تجویز کیا گیا ہے کہ اشاریہ شدہ آمدنی سالانہ کرایے کی قیمت پر مقرر کی جائے، جو دکان کی قیمت کے 10 فیصد پر مقرر ہے۔

آئندہ عام انتخابات سے قبل نگراں حکومت کا ہاؤسنگ سوسائٹیز کے لیے بڑی خوشخبری کا اعلان

ایف بی آر اس وقت آن لائن ریٹیلرز کو ٹیکس نیٹ میں لانے کے امکانات کا جائزہ لے رہا ہے۔  ان خوردہ فروشوں کو ٹیکس کے نظام میں شامل کرنے کے لیے بہترین طریقہ کا تعین کرنے کے لیے آن لائن مارکیٹ پلیس جیسے دراز اور دیگر کے ساتھ بات چیت جاری ہے۔

موبائل ایپ خود بخود ماہانہ ٹیکس کی ادائیگی کا حساب لگائے گی، ریکارڈ برقرار رکھے گی، اور وینڈر کو ادائیگی میں سہولت فراہم کرے گی۔  اس اسکیم میں تمام دکانداروں کا احاطہ کیا جائے گا، بشمول خدمات فراہم کرنے والے یا سامان فراہم کرنے والے، نیز پیشہ ور افراد وغیرہ۔

اس اسکیم کے تحت ادا کردہ انکم ٹیکس کو ایڈوانس ٹیکس سمجھا جائے گا اور اسے کم از کم ٹیکس سمجھا جائے گا۔  اسے ٹیکس سال 2024 اور اس کے بعد کے سالوں کے لیے قابل ادائیگی کل انکم ٹیکس کے خلاف ایڈجسٹ کیا جا سکتا ہے۔  اس اسکیم کے تحت ادا کیے گئے انکم ٹیکس کے لیے ریفنڈ جاری نہیں کیے جائیں گے۔

ڈیفالٹرز جو ماہانہ ادائیگی کرنے میں ناکام رہتے ہیں انہیں جرمانے کا سامنا کرنا پڑے گا، جیسے کہ ان کی دکانوں کو سیل کرنا یا ماہانہ قسط کے برابر رقمی جرمانہ عائد کرنا۔  تاہم، یہ نوٹ کرنا ضروری ہے کہ اس اسکیم کا اطلاق قومی یا بین الاقوامی چین اسٹورز کی اکائیوں کے طور پر کام کرنے والی کمپنیوں، یا بین الاقوامی وابستگیوں اور متعدد صوبوں میں دفاتر والی پیشہ ور فرموں پر نہیں ہوتا ہے۔

نگران وفاقی کابینہ کا قومی ایئرلائن پی آئی اے کو دو حصوں میں پرائیویٹ کرنے کا منصوبہ

کون سے ٹیکس سے وفاقی حکومت اربوں روپے آمدنی کر رہی ہے

نیشنل سیونگز نے 26 جنوری سے شروع ہونے والی مختلف قومی بچت اسکیموں میں منافع کی شرح میں کمی کا اعلان

اسٹیٹ بینک آف پاکستان کا جعلی نوٹوں سے نقصان پر تمام مالیت کے نئے کرنسی نوٹ متعارف کرانے کا فیصلہ