جیل کے اندر مر جاؤں گا، ڈیل نہیں کروں گا، عدت میں نکاح کے کیسں کے فیصلے کے بعد عمران خان کا بیان آگیا

پی ٹی آئی کے سابق چیرمین عمران خان نے کہا کہ میرے ساتھ ناانصافی کی گئی ہے، وہ عدت کا فیصلے کرکے میری تذلیل کرنا چاہتے ہیں، وہ مجھ سے زبردستی ڈیل کرنے کی کوشش کر رہے ہیں، لیکن میں کبھی راضی نہیں ہوں گا۔  ان کے ساتھ معاملہ کریں.”  انہوں نے یہ بھی بتایا کہ ان کے گندے کام کرنے کے لیے باہر سے لوگ لائے گئے ہیں۔

نکاح کیس کے فیصلے کے بعد پی ٹی آئی کے سابق چیئرمین نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کسی قسم کی ڈیل نہ کرنے کے عزم کا اظہار کیا۔  انہوں نے یہاں تک کہا کہ بشریٰ بی بی جن کا توشہ خانہ کیس سے کوئی تعلق نہیں، کو بھی 14 سال کی سزا سنائی گئی۔  ان کا ماننا ہے کہ توشہ خانہ کیس میں انہیں جو سزا ملی وہ بے مثال ہے۔

عدالت نے دوران عدت نکاح کیس میں عمران خان اور بشریٰ بی بی کو سزا سنا دی

پی ٹی آئی کے سابق چیئرمین نے دعویٰ کیا کہ جنرل باجوہ اور ڈونلڈ لو نے سائفر کیس میں جرم کیا، اور انہیں بے نقاب کرنے پر سزا دی گئی۔  انہوں نے زور دے کر کہا کہ ایسا پہلی بار ہوا ہے۔

انہوں نے یہ بھی بتایا کہ انہیں 9 مئی کو غیر قانونی طور پر اغوا کیا گیا اور چار دن تک جیل میں رکھا گیا، اس دوران ان کے خلاف جھوٹے مقدمات بنائے گئے۔

پی ٹی آئی کے سابق چیئرمین نے کہا کہ وہ گزشتہ پچاس سال سے متعدد مقدمات کا سامنا کر رہے ہیں۔  انہوں نے نواز شریف کے مقدمات کی معافی کی رفتار کا موازنہ منی لانڈرر کے کیس سے کیا۔  انہوں نے کہا کہ سپریم کورٹ کی جانب سے نواز شریف کو نااہل قرار دینے اور جے آئی ٹی کی تشکیل کے باوجود ان کے خلاف تمام مقدمات خارج کر دیے گئے۔

انہوں نے یہ بھی نشاندہی کی کہ ایف آئی اے کے پاس شہباز شریف کے خلاف ایک مضبوط کیس تھا لیکن اسے ختم کر دیا گیا۔  ان کا خیال ہے کہ ان کی پارٹی کے ارکان کی گرفتاریاں اس وقت شروع ہوئیں جب انتخابات کی تاریخ طے ہوئی۔

پی ٹی آئی کے سابق چیئرمین عمران خان نے آئندہ الیکشن پر پیپلز پارٹی اور جماعت اسلامی کو مشورہ دے دیا

سابق وزیراعظم عمران خان نے ٹوئٹر پر سائفر کیس پر قوم کے نام پیغام جاری کر دیا

بلومبرگ کے سروے میں عمران خان کو پاکستان کی معیشت کی بحالی کے لیے بہتر انتخاب قرار دے دیا گیا

دوران عدت نکاح کیس میں عمران خان، بشریٰ بی بی اور خاور مانیکا کی آپس میں زبردست لڑائی ہو گئ