خیبر پختونخوا میں 8 رہنما ایسے ہیں جو 8 فروری کو ہونے والے انتخابات میں جیتنے پر وزیراعلیٰ بننا چاہتے ہیں

خیبر پختونخوا میں 8 رہنما ایسے ہیں جو 8 فروری کو ہونے والے انتخابات میں جیتنے پر وزیراعلیٰ بننا چاہتے ہیں

 

 

خیبر پختونخوا میں مختلف سیاسی جماعتوں سے تعلق رکھنے والے 8 رہنما ایسے ہیں جو 8 فروری کو ہونے والے انتخابات میں جیتنے پر وزیراعلیٰ بننا چاہتے ہیں۔

ضلع نوشہرہ سے پی ٹی آئی پارلیمانی کے مرکزی چیئرمین پرویز خٹک قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 33 اور صوبائی اسمبلی کے دو حلقوں پی کے 87 اور پی کے 88 سے انتخاب لڑ رہے ہیں۔

پی ٹی آئی (پی) کے مرکزی وائس چیئرمین محمود خان سوات کے این اے 4 اور پی کے 10 سے پارٹی کے امیدوار ہیں۔  پرویز خٹک الیکشن جیتنے کی صورت میں خود کو خیبرپختونخوا کا نیا وزیر اعلیٰ بنانے کا اعلان کر چکے ہیں۔

اسی طرح محمود خان بھی الیکشن جیتنے کی صورت میں وزیراعلیٰ کے عہدے کے مضبوط امیدوار کے طور پر دیکھے جا رہے ہیں۔

جمعیت علمائے اسلام (ف) میں بھی دو رہنما خود کو وزارت اعلیٰ کے امیدوار تصور کر رہے ہیں۔  ان میں سے ایک سابق وزیر اعلیٰ اور وفاقی وزیر اکرم خان درانی ہیں، جو بنوں کے حلقہ پی کے 100 اور پی کے 102 سے الیکشن لڑ رہے ہیں۔

پی ٹی آئی رہنما صنم جاوید این اے 119 سے مریم نواز کے مقابلے سے دستبردار، بہن فلک جاوید نے ٹوئٹر پر تصدیق کر دی

اسی طرح مولانا فضل الرحمان کے بھائی اور سابق ایم پی اے مولانا لطف الرحمان بھی الیکشن جیتنے کی صورت میں جے یو آئی میں وزارت اعلیٰ کے امیدوار بن سکتے ہیں۔

تحریک انصاف کے اندر خیبرپختونخوا میں الیکشن جیتنے کی صورت میں وزارت اعلیٰ کے عہدے کے لیے دو امیدوار ہیں۔  پارٹی کے موجودہ صوبائی صدر علی امین گنڈا پور اور سابق وزیر خزانہ تیمور جھگڑا سے توقع ہے کہ اگر پی ٹی آئی صوبے میں اکثریت حاصل کر لیتی ہے تو وہ اس عہدے کے لیے امیدوار ہوں گے۔

علی امین گنڈا پور ڈی آئی خان سے صوبائی اسمبلی کے حلقہ پی کے 112 اور پی کے 113 سے انتخاب میں حصہ لے رہے ہیں جب کہ تیمور جھگڑا پشاور کے حلقہ پی کے 79 سے انتخاب لڑ رہے ہیں۔

اگر مسلم لیگ ن 8 فروری کو الیکشن جیتتی ہے اور سب سے زیادہ ووٹ حاصل کرتی ہے تو شانگلہ اور سوات سے امیر مقام وزیر اعلیٰ بن سکتے ہیں۔  اس عہدے کے لیے ایک اور امیدوار عوامی نیشنل پارٹی کے امیر حیدر خان ہو سکتے ہیں، جو مردان سے الیکشن لڑ رہے ہیں۔

چیئرمین پی ٹی آئی بیرسٹر گوہر نے انتخابی منشور پیش کیا

ملک بھر میں کتنے پولنگ اسٹیشنز بنائے جائیں گے الیکشن کمیشن نے تفصیل جاری کر دی