پاکستان تحریک انصاف کی رہنما صنم جاوید کو تین حلقوں میں انتخابی نشانات الاٹ کر دیے گے

پاکستان تحریک انصاف کی رہنما صنم جاوید کو تین حلقوں میں انتخابی نشانات الاٹ کر دیے گے

 

پاکستان تحریک انصاف کی رہنما صنم جاوید کو 2024 میں ہونے والے عام انتخابات میں حصہ لینے کے لیے ریٹرننگ افسران نے تین حلقوں میں انتخابی نشانات تفویض کیے ہیں۔

سپریم کورٹ آف پاکستان کے فیصلے کے بعد ریٹنگ افسران نے صنم جاوید کو قومی اسمبلی کے دو اور پنجاب اسمبلی کے ایک حلقے سے الیکشن لڑنے کے لیے انتخابی نشان الاٹ کر دیا ہے۔

مسلم لیگ نواز نے اپنا انتخابی منشور پیش کر دیا

ریٹرننگ افسران نے صنم جاوید کو حلقہ این اے 119 سے ریکیٹ کا نشان، این اے 120 سے پکچر فریم کا نشان اور پی پی 150 سے تکیہ کا انتخابی نشان تفویض کیا ہے۔  یہ امر قابل ذکر ہے کہ حلقہ این اے 119 میں صنم جاوید کی مدمقابل مریم نواز ہیں اور ان کے درمیان سخت مقابلے کی توقع ہے۔

پی ٹی آئی رہنما صنم جاوید کے والد جاوید اقبال نے کہا ہے کہ وہ کس حلقے سے الیکشن میں حصہ لیں گی اس حوالے سے ابھی فیصلہ نہیں ہوا۔

گزشتہ روز سپریم کورٹ کے جسٹس منیب اختر کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے صنم جاوید کے کاغذات مسترد ہونے کے خلاف اپیلوں کی سماعت کرتے ہوئے انہیں تینوں حلقوں سے الیکشن لڑنے کی ہدایت کی تھی۔

چنو نئی سوچ کو کے سلوگن کے ساتھ پاکستان پیپلز پارٹی نے انتخابی منشور جاری کر دیا

پولنگ سٹیشنز کو کس بنیاد پر حساس یا انتہائی حساس قرار دیا جاتا ہے

آئندہ انتخابات کی سیکیورٹی کے لیے پنجاب بھر میں 5 فروری کو ہی فوج تعینات کرنے کا فیصلہ

8 فروری تک ملک بھر میں انٹرنیٹ سروس کی بندش پر سندھ ہائی کورٹ کا بڑا حکم آگیا