پی ٹی آئی کے بانی عمران خان اور اڈیالہ جیل کے سپرنٹنڈنٹ کے درمیان تلخ کلامی

پی ٹی آئی کے بانی عمران خان اور اڈیالہ جیل کے سپرنٹنڈنٹ کے درمیان تلخ کلامی

 

 

سائفر کیس کی سماعت کے بعد سابق وزیراعظم اور پی ٹی آئی کے بانی چیئرمین عمران خان میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو میں مصروف ہوگئے۔  تاہم اڈیالہ جیل کے سپرنٹنڈنٹ اسد وڑائچ نے مداخلت کرتے ہوئے انہیں بولنے سے روک دیا جس سے عمران خان طیش میں آ گئے۔

عمران خان نے زور دے کر کہا کہ عدالت کھلی ہے، کسی کو اختیار نہیں کہ وہ انہیں میڈیا سے بات کرنے سے روکے۔  اڈیالہ جیل کے سپرنٹنڈنٹ نے جواب دیتے ہوئے کہا کہ میڈیا عدالتی کارروائی کی کوریج کے لیے موجود ہے، سیاسی بحث میں شامل ہونے کے لیے نہیں۔  عمران خان نے اس بات کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ ہائی کورٹ نے انہیں میڈیا سے بات کرنے کی اجازت دی ہے، اس بات پر زور دیتے ہوئے کہ وہ کسی بھی رکاوٹ کے باوجود اس حق کا استعمال کریں گے۔

سائفر کیس کی سماعت میں شاہ محمود قریشی اور پراسیکیوٹر رضوان عباسی کے درمیان تلخ جملوں کا تبادلہ

اڈیالہ جیل کے سپرنٹنڈنٹ نے عمران خان کو چیلنج کیا کہ اگر انہیں میڈیا سے بات کرنے کی اجازت ہے تو عدالت سے تحریری حکم نامہ فراہم کریں۔  اس نے اگلے دن جج کے ساتھ اس معاملے پر بات کرنے کا ارادہ بھی ظاہر کیا۔  اس کے بعد راولپنڈی ریجن کے ڈی آئی جی جیل خانہ جات میڈیا کے نمائندوں کو وہاں سے چلے جانے کی ہدایت کرتے ہوئے کمیونٹی سینٹر پہنچے۔

ادھر عمران خان کی بہن علیمہ خان نے اڈیالہ جیل کے باہر میڈیا سے خطاب کرتے ہوئے کمرہ عدالت میں پیش آنے والے واقعے کا انکشاف کیا۔  انہوں نے دعویٰ کیا کہ عمران خان میڈیا سے گفتگو کر رہے تھے جب اڈیالہ جیل کے سپرنٹنڈنٹ نے پی ٹی آئی کے بانی کی توہین کی۔

سپرنٹنڈنٹ نے اسے "تم” کہا۔  علیمہ خان نے پی ٹی آئی کے بانی کے ساتھ جیل میں ہونے والے سلوک پر اپنی تشویش کا اظہار کرتے ہوئے اس بات پر زور دیا کہ انہوں نے ہمیشہ باوقار طریقے سے سلوک کیا ہے۔  انہوں نے سوال کیا کہ اگر پی ٹی آئی کے بانی کے ساتھ جیل میں ناروا سلوک ہوتا ہے تو عام لوگوں کے ساتھ کیا سلوک کیا جائے گا۔

پی ٹی آئی کے بانی عمران خان کے خلاف توشہ خانہ ریفرنس میں ہندوستانی کمپنی کے سیلز مین کا بیان ریکارڈ

علیمہ خان نے کہا کہ جج دلاور نے فیصلہ دیا تھا، لیکن ہائی کورٹ نے اسے معطل کر دیا تھا۔  اس معاملے سے متعلق عرضی تین ہفتوں سے سپریم کورٹ میں زیر التوا ہے۔  انہوں نے چیف جسٹس پر زور دیا کہ وہ پی ٹی آئی کے بانی کے خلاف سزا معطل کرنے کی درخواست کی سماعت کو تیز کریں۔  اس کے نتیجے میں پی ٹی آئی کے بانی انتخابات میں حصہ لینے سے نااہل ہو جائیں گے۔  انہوں نے اس اپیل کی اہمیت پر زور دیا کہ پوری قوم اس کی سماعت اور گواہی دے رہی ہے۔

بجلی کے بلوں پر ٹیکسوں کے ذریعے حکومت نے عوام سے ہوشربا آمدنی جمع کر لی