نگراں وزیر اعلیٰ پنجاب محسن نقوی کو ایک اور بڑا عہدہ دینے کا فیصلہ

نگراں وزیر اعلیٰ پنجاب محسن نقوی
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

نگراں وزیر اعلیٰ پنجاب محسن نقوی کو ایک اور بڑا عہدہ دینے کا فیصلہ

 

نگراں وزیر اعلیٰ پنجاب محسن نقوی کو نگراں وفاقی حکومت نے پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کا چیئرمین مقرر کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔  یہ فیصلہ وزیر اعظم کی جانب سے نقوی کو اس عہدے کے لیے نامزد کرنے اور سابق چیئرمین ذکا اشرف کا استعفیٰ قبول کرنے کے بعد سامنے آیا ہے۔

یہ امر قابل ذکر ہے کہ اشرف نے اپنی مدت ملازمت پوری ہونے سے قبل ہی اپنے عہدے سے استعفیٰ دے دیا تھا۔  استعفیٰ پی سی بی کے سرپرست اعلیٰ اشرف نے خود بھجوایا، جس کی تصدیق نگراں وفاقی وزیر فواد حسن فواد نے کی۔

سائفر کیس کی سماعت میں شاہ محمود قریشی اور پراسیکیوٹر رضوان عباسی کے درمیان تلخ جملوں کا تبادلہ

فواد حسن فواد نے مزید کہا کہ پی سی بی کی انتظامی کمیٹی کے پاس کچھ معاملات کو سنبھالنے کا اختیار ہے جب کہ دوسروں پر پابندی ہے۔

بین الصوبائی رابطہ کی وزارت کے طور پر، فواد حکومتی ہدایات کی بنیاد پر پی سی بی کے معاملات کی نگرانی کر رہے تھے۔  حکومت کی جانب سے فیصلہ سازی کے اختیارات نہ ہونے کی وجہ سے ذکا اشرف نے نہ صرف چیئرمین بلکہ بورڈ آف گورنرز کے رکن کے عہدے سے بھی استعفیٰ دیا۔

سپریم کورٹ آف پاکستان نے اپنی کارکردگی رپورٹ آفیشل ویب سائٹ پر شائع کر دی

اپنے بیان میں ذکا اشرف نے کرکٹ کی بہتری کے لیے اپنی لگن کا اظہار کیا لیکن موجودہ صورتحال کو اس میں رکاوٹ قرار دیا۔  یہ امر اہم ہے کہ وزارت بین الصوبائی رابطہ نے حال ہی میں انتظامی کمیٹی کے چیئرمین کے ساتھ میٹنگ کی۔

5 فروری تک ان کی مدت ملازمت کے باوجود، اشرف اور پی سی بی مینجمنٹ کمیٹی دونوں نے قبل از وقت استعفیٰ دے دیا۔  پی سی بی کے الیکشن کمشنر خاور شاہ کو قائم مقام چیئرمین پی سی بی کا عہدہ سنبھالنے کی توقع ہے۔

رواں ماہ کے شروع میں نگران وفاقی حکومت نے ذکا اشرف پر پابندیاں عائد کر دی تھیں جس کے باعث وہ اہم فیصلے نہیں کر سکتے تھے۔

حکومت کا آئی ایم ایف کو سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں اضافہ نہ کرنے،گیس کی قیمتوں میں اضافہ کرنے،سبسڈی ختم کرنے کی یقین دہانی

نگران وفاقی وزیر برائے اطلاعات و نشریات اور پارلیمانی امور مرتضیٰ سولنگی نے ایوان بالا کے اجلاس کے دوران جماعت اسلامی کے سینیٹر مشتاق احمد کے سوال کے جواب میں اس حد بندی کی تصدیق کی۔  نگراں حکومت نے واقعی پی سی بی کے چیئرمین کے اختیارات میں کمی کی ہے اور انہیں کوئی بھی بنیادی فیصلہ کرنے سے روک دیا ہے۔