الیکشن کمیشن آف پاکستان کے الیکشن ترمیمی بل 2023 کے بعد امیدواروں کی فیس ناقابل واپسی ہو گی

الیکشن کمیشن آف پاکستان
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

الیکشن کمیشن آف پاکستان کے الیکشن ترمیمی بل 2023 کے بعد امیدواروں کی فیس ناقابل واپسی ہو گی

 

الیکشن کمیشن آف پاکستان
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

 

الیکشن کمیشن آف پاکستان نے 2024 میں ہونے والے آئندہ عام انتخابات کے لیے کاغذات نامزدگی جمع کرانے والے 28,000 سے زائد امیدواروں کی جانب سے ادا کی گئی فیس کے ذریعے قومی خزانے کے لیے 647 ملین روپے کامیابی سے جمع کیے ہیں۔

امیدواروں سے کاغذات نامزدگی جمع کرانے کے لیے وصول کی جانے والی فیس ناقابل واپسی ہے۔  الیکشن کمیشن کے ترجمان نے اس پیشرفت کی تصدیق کرتے ہوئے مزید تفصیلات نہیں بتائی۔

الیکشن کمیشن آف پاکستان نے سب سے زیادہ اور سب سے کم ووٹرز والے پانچ اضلاع کی لسٹ جاری کر دی

گزشتہ انتخابات میں بھی بڑی تعداد میں امیدواروں نے کاغذات نامزدگی جمع کرائے تھے۔  تاہم، ماضی میں، فیس کچھ شرائط کے تحت قابل واپسی تھی۔  جو امیدوار ڈالے گئے ووٹوں کے ایک چوتھائی سے بھی کم ووٹ حاصل کرنے میں ناکام رہے، ان کی جمع پونجی برقرار رکھی گئی، جسے مقامی طور پر ‘زمانہ سب ہونا’ کے نام سے جانا جاتا تھا۔

تاہم گزشتہ سال الیکشن ایکٹ 2017 میں ترمیم کے بعد اب امیدواروں کو قومی اسمبلی کے لیے جمع کرائے گئے ہر فارم کے لیے 30,000 روپے اور صوبائی اسمبلی کے ہر فارم کے لیے 20,000 روپے جمع کرانے ہوں گے۔  یہ پہلی بار ہے کہ کاغذات نامزدگی ایک مخصوص ناقابل واپسی رقم کے ساتھ موصول ہوئے ہیں۔

الیکشن کمیشن کے ایک اہلکار کے مطابق، الیکشن (ترمیمی) بل 2023، جسے گزشتہ سال پارلیمنٹ نے منظور کیا تھا، میں واضح طور پر کہا گیا ہے کہ امیدواروں کو اپنی درخواست کے ساتھ ایک مخصوص رقم قومی خزانے میں جمع کرانی ہوگی، جو کہ قابل واپسی نہیں ہوگی۔  مزید برآں، امیدواروں کو تمام انتخابی اخراجات کے لیے رسیدوں اور ادائیگیوں کے رجسٹر کو برقرار رکھنے کی ضرورت ہوتی ہے، ساتھ ہی تفصیلی مالی ریکارڈ بھی۔

الیکٹیبلز سیاست دان کون ہوتے ہیں اور یہ کسی پارٹی کے لیے کتنے ضروری ہوتے ہے

نئے قانون کے نفاذ کے نتیجے میں، الیکشن کمیشن کو مجموعی طور پر دو کروڑ روپے موصول ہوئے. موصول ہونے والے 8,082 کاغذات نامزدگی میں سے 7,474 قومی اسمبلی کی جنرل نشستوں کے لیے جمع کرائے گئے جب کہ 608 مخصوص نشستوں کے لیے تھے۔

اسی طرح چاروں صوبوں سے صوبائی اسمبلی کی نشستوں کے لیے کل 20,232 کاغذات نامزدگی جمع کرائے گئے۔  اس سے خزانے میں تقریباً 404.64 ملین روپے کا اضافہ ہوا ہے۔

انتخابات  2024 میں دلچسپ صورتحال بعض حلقوں میں ایک ہی خاندان کے امیدوار آمنے سامنے

چاروں صوبائی اسمبلیوں میں جنرل نشستوں کے لیے کل 18 ہزار 477 اور مخصوص نشستوں کے لیے 1755 کاغذات نامزدگی موصول ہوئے۔  اس کے نتیجے میں تقریباً 647.100 ملین روپے قومی خزانے میں جمع ہوں گے۔