سندھ ہائی کورٹ نے عوامی مقامات پر بل بورڈز اور سیاسی رہنمائوں کی تصاویر آویزاں کرنے سے متعلق بڑا حکم جاری کردیا

سندھ ہائی کورٹ
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

سندھ ہائی کورٹ نے عوامی مقامات پر بل بورڈز اور سیاسی رہنمائوں کی تصاویر آویزاں کرنے سے متعلق بڑا حکم جاری کردیا

 

سندھ ہائی کورٹ
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

 

کراچی (عبدالصمد بھٹی) سندھ ہائی کورٹ نے شہر بھر سے سائن بورڈز، ہورڈنگز، فلائی اوورز اور پیڈیسٹیرین برج سے تمام سیاسی بینرز ہٹانے کا حکم۔اگر بل بورڈز اور ہورڈنگز کسی امیدوار کی جانب سے ہو تو اس کے خلاف مقدمہ درج کیا جاۓ ، جسٹس ندیم اختر

اگر کوئی ٹاؤن یا کنٹونمنٹ افسر لیت و لال سے کام لے تو اسکے خلاف کارروائی کی جائے ۔پولیس حکام بھی ملے ہوئے ہوں تو انکے خلاف بھی مقدمات درج کیے جائیں۔

الیکشن کمیشن اور شہری انتظامیہ کو تصاویر آویزاں کرنے والے سیاس رہنمائوں کے خلاف کارروائی کا حلم،ہم شہر میں آنے والوں کو کیا بتانا چاہتے ہیں یہ مہذب لوگوں کا شہر ہے یا جنگل ہے ؟؟ جسٹس ندیم اختر

اس شہر کو جنگل مت بنائیں جائیں جاکر اپنی ذمہ داری پوری کریں ، عدالت کا کے ایم سی اور کنٹونمنٹس وکلا سے مکالمہ

ہم کارروائی کررہے ہی ان کچھ رکاوٹیں آرہی ہیں ، وکیل کنٹونمنٹ

اگر کام نہیں کرسکتے تو بند کردیں کنٹونمنٹ ، عدالت کا شدید برہمی کا اظہار

شہر بھر سے تمام بل بورڈز اور ہورڈنگز ہٹا کر اکتیس جنوری کو رپورٹ پیش کرنے کا حکم

درخواست میں کہا گیا ہے کہ سپریم کورٹ نے 2016 میں بل بورڈز،ہورڈنگز پر پابندی کا فیصلہ دیا تھا،پابندی کے باوجود پبلک مقامات پر بل بورڈز لگائے جارہے ہیں۔