امریکا میں صدارتی انتخابات 2024 کے لیے ڈونلڈ ٹرمپ کی پہلی کامیابی

ڈونلڈ ٹرمپ
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

امریکا میں صدارتی انتخابات 2024 کے لیے ڈونلڈ ٹرمپ کی پہلی کامیابی

 

ڈونلڈ ٹرمپ
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

 

امریکا میں صدارتی انتخابات 2024 کے عمل کے اغاز پر پہلی جنگ سابق صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے جیت لی ہے۔ ریاست آئیوا میں ریپبلیکن پارٹی کے کاکس میں ٹرمپ فاتح قرار پائے ہیں۔

ٹرمپ کے مقابلے میں نکی ہیلے سمیت دو امیدوار تھے۔ دوسری اور تیسری پوزیشن کے نتائج فوری طور پر جاری نہیں کیے گئے تاہم یہ واضح ہے کہ ٹرمپ پہلے پڑاؤ میں جیت چکے ہیں۔

امریکہ میں 2024 کے صدارتی انتخابی عمل کے ابتدائی مرحلے میں سابق صدر ڈونلڈ ٹرمپ فاتح بن کر ابھرے۔  ٹرمپ نے آئیووا میں منعقدہ ریپبلکن پارٹی کے کاکس میں کامیابی حاصل کرتے ہوئے نکی ہیلی سمیت اپنے دو حریفوں کو پیچھے چھوڑ دیا۔  اگرچہ دوسرے اور تیسرے نمبر پر آنے والے امیدواروں کی صحیح درجہ بندی کا فوری طور پر انکشاف نہیں کیا گیا، تاہم یہ واضح تھا کہ ٹرمپ نے اس پہلے اہم دور میں فتح حاصل کی تھی۔

مالدیپ میں بھارت کے کتنے فوجی موجود ہے اور مالدیپ نے انہیں 15 مارچ تک ملک سے نکل جانے کا کیوں کہا

ریاستہائے متحدہ میں صدارتی امیدواروں کے انتخاب کے لیے کاکسز اور پرائمریز طویل عرصے سے قائم کیے گئے ہیں۔  جنوری میں صدارتی انتخابی عمل کے آغاز پر، دونوں بڑی جماعتیں، ریپبلکن پارٹی اور ڈیموکریٹک پارٹی، اپنے اپنے کاکسز اور پرائمریز کا انعقاد کرتی ہیں۔

کسی کاکس یا پرائمری کے دوران، کسی مخصوص ریاست میں پارٹی کے رجسٹرڈ ممبران اپنے ووٹ ڈالتے ہیں تاکہ ان مندوبین کا تعین کیا جا سکے جو بعد میں پارٹی کے قومی کنونشن میں صدارتی امیدوار کے انتخاب میں حصہ لیں گے۔  ان نمائندوں کو منتخب کرنے سے، ووٹرز یہ بصیرت حاصل کرتے ہیں کہ قومی سطح پر کس امیدوار کے کامیاب ہونے کا امکان ہے۔

جب کہ کچھ ریاستیں پرائمری کے بعد کاکسز کا انتخاب کرتی ہیں، صرف ایک فرق اس حقیقت میں ہے کہ کاکسز کا انتظام خود سیاسی پارٹیاں کرتی ہیں، جب کہ پرائمریز ریاست کے زیر انتظام ہیں۔  یہ نوٹ کرنا ضروری ہے کہ کسی ریاست میں کاکس یا پرائمری جیتنا جیتنے والے صدارتی امیدوار کی نامزدگی کی ضمانت نہیں دیتا۔  تاہم، یہ ایک اہم ابتدائی قدم کے طور پر کام کرتا ہے اور مستقبل کے رجحانات کے بارے میں قیمتی بصیرت فراہم کر سکتا ہے۔

آئیووا کاکس کو خاص اہمیت حاصل ہے کیونکہ یہ صدارتی انتخابات میں افتتاحی کاکس کو نشان زد کرتا ہے۔  اس کے بعد، ڈیموکریٹک پارٹی کے صدارتی امیدوار کے تعین کے لیے پہلی پرائمری 23 جنوری کو نیو ہیمپشائر میں ہوگی۔

پرائمری یا کاکسز کی تعداد جس میں امیدوار کی جیت ہوتی ہے وہ قومی کنونشن کو محفوظ بنانے اور اس کے نتیجے میں صدارتی نامزدگی کے ان کے امکانات کو براہ راست متاثر کرتی ہے۔
امریکا کے انتخابات میں کاکس اور پرائمریز صدارتی امیدواروں کو چننے کا ایک طریقہ ہیں جو طویل عرصے سے رائج ہیں۔

کاکس اور پرائمریز کیا ہیں؟

ہر مرتبہ امریکہ میں صدارتی انتخابات کے لیے عمل کا اغاز جنوری میں ہوتا ہے جب دونوں بڑی جماعتیں ریپبلکن پارٹی اور ڈیموکریٹک پارٹی اپنے اپنے کاکس اور پرائمری کا انعقاد کرتی ہیں۔

کاکس یا پرائمری میں ریاست میں موجود پارٹی کے رجسٹرڈ ممبرز ووٹ کے ذریعے ان نمائندوں کو منتخب کرتے ہیں جنہوں نے بعد میں قومی سطح پر پارٹی کے کنونشن میں صدارتی امیدوار کے انتخاب میں حصہ لینا ہوتا ہے۔

ووٹرز پر یہ بات واضح ہوتی ہے کہ کون سے نمائندوں کو چننے سے بالاخر قومی سطح پر کون سا امیدوار کامیاب ہوگا۔

بعض ریاستوں میں کاکس منعقد ہوتے ہیں اور بعد میں پرائمریز دونوں میں فرق ہی صرف اتنا ہے کہ کاکس سیاسی جماعتیں خود منعقد کرتی ہیں اور پرائمریز کا انعقاد ریاستی انتظامیہ کی جانب سے کیا جاتا ہے۔

کسی ایک ریاست میں کاغذ یا پرائمری جیتنے کا یہ مطلب نہیں کہ جیتنے والا صدارتی امیدوار نامزد ہو گیا تاہم یہ اس سلسلے میں پہلا اہم قدم ضرور ہے اور اس سے رجحانات کا اندازہ لگایا جا سکتا ہے۔

آئیوا کاکس اس لیے اہم ہے کہ یہ صدارتی انتخابات میں سب سے پہلا کاکس ہے۔ ڈیموکریٹک پارٹی کے صدارتی امیدوار کو چننے کیلئے سب سے پہلی پرائمری نیوہمپشائر میں 23 جنوری کو منعقد ہوگی۔

جو امیدوار جتنی زیادہ پرائمریز یا کاکس میں کامیاب ہو اس کے قومی کنونشن میں جیتنے کے امکانات اور اس کے نتیجے میں صدارتی امیدوار نامزد ہونے کے چانسز بڑھ جاتے ہیں۔