سالی آدھی گھر والی۔معاشرتی اصلاحی کہانی

سالی آدھی گھر والی۔معاشرتی اصلاحی کہانی

 

فوٹو بشکریہ گوگل امیجز
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

 

ہمارے معاشرے میں "سالی” کی اصطلاح عام طور پر بیوی کی بہن کے لیے استعمال کی جاتی ہے، حالانکہ یہ سب سے مناسب لفظ کا انتخاب نہیں ہو سکتا۔  تاہم، آئیے اپنی توجہ اپنی سالیوں کے ساتھ باعزت تعلقات کو برقرار رکھنے کی اہمیت پر مرکوز کریں۔

عام طور پر بیوی کی بڑی بہنیں شادی شدہ ہوتی ہیں اور اگر وہ غیر شادی شدہ بھی ہوتی ہیں تو وہ وقت کے ساتھ ساتھ پختہ ہوتی ہیں اور ان میں سنجیدگی اور برداشت کا جذبہ پیدا ہوتا ہے۔

دوسری طرف بیوی کی چھوٹی بہنیں زندگی کے اس مرحلے پر ہیں جہاں ہر چیز خوبصورت اور دلکش لگتی ہے۔  ایسے میں بہن کی شادی اور خاندان کے نئے فرد یعنی بہنوئی کی آمد گھر میں ایک انوکھی حرکت پیدا کرتی ہے۔

معاشرتی اصولوں کی وجہ سے، یہ چھوٹی بہنیں اکثر اپنے بہنوئی کے ساتھ ہنسی مذاق میں مصروف رہتی ہیں اور ان کا اچھا خیال رکھتی ہیں۔  جب بہن گھر پر موجود نہیں ہوتی ہے، تو یہ بہنیں اکثر اپنا وقت تفریح ​​اور اپنے بہنوئی کی صحبت میں رکھنے کے لیے وقف کرتی ہیں، جس سے بوریت کے احساس کو روکا جاتا ہے۔

ہمارے معاشرے میں ایک مشہور کہاوت ہے کہ ’’سالی آدھی گھر والی‘‘۔  یہ کہاوت اُس قریبی رشتے کو اجاگر کرتی ہے جو بہنوئی اور اس کی بیوی کی چھوٹی بہنوں کے درمیان پیدا ہو سکتی ہے۔

جب مرد اپنے قریبی دوستوں کے ساتھ اکٹھے ہوتے ہیں، تو وہ اکثر اپنی سالی کے ساتھ اپنے رشتوں پر بات کرتے وقت ایک عجیب سی مسکراہٹ پہنتے ہیں۔  دوست معنی خیز تبصروں سے اس مسکراہٹ کو مزید گہرا کرتے ہیں۔

یہ عجیب سچائی ہمارے معاشرے میں بدستور موجود ہے۔  اسلامی تعلیمات کے مطابق بہنوئی اور سالی کے درمیان پردہ کا حکم دیتی ہے۔  سالی کے لیے بہنوئی کو محرم (وہ شخص جس کے ساتھ نکاح ممنوع ہے)، اس لیے اس رشتے میں احتیاط اور مناسب حدود کو برقرار رکھنا بہت ضروری ہے۔

یہ حقیقت بہنوئی کے علاوہ کسی سے ناواقف ہے۔  وہ اپنی بیوی کو یہ معلومات کبھی ظاہر نہیں کرے گا۔  یہ ایک نازک معاملہ ہے جسے صرف وہی جانتا اور سمجھتا ہے۔

مردوں میں اپنے اعمال کو قبول کرنے کے لیے ضروری یقین کی کمی ہے۔  اوہ خدایا!  اس آزمائش کا شکار نہ ہوں۔  اپنے گھر والوں کو اس برائی سے بچائیں اور اپنے گھریلو ماحول کو اسلام کی تعلیمات کے مطابق بنائیں۔  اللہ آپ کی حفاظت فرمائے اور آپ کو اسلام کے مطابق زندگی گزارنے کی توفیق عطا فرمائے۔  آمین