بلوچستان میں ایسا امیدوار جسے ن لیگ اور پیپلز پارٹی دونوں نے بن مانگے ٹکٹ دے دیا

ن لیگ اور پیپلز پارٹی
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

بلوچستان میں ایسا امیدوار جسے ن لیگ اور پیپلز پارٹی دونوں نے بن مانگے ٹکٹ دے دیا

ن لیگ اور پیپلز پارٹی
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

 

جوں جوں آئندہ انتخابات قریب آرہے ہیں، بڑی سیاسی جماعتوں میں پارٹی ٹکٹوں کی تقسیم کے حوالے سے اختلافات پیدا ہوگئے ہیں۔  متعدد امیدوار کسی ایک حلقے میں ٹکٹ کے لیے مقابلہ کر رہے ہیں، جیسے کہ نرسو بیمار۔

دلچسپ بات یہ ہے کہ بلوچستان میں ایک ایسا ’خوش قسمت‘ امیدوار ہے جسے ملک کی دونوں بڑی سیاسی جماعتوں مسلم لیگ ن اور پیپلز پارٹی کی جانب سے پذیرائی ملی ہے۔  دونوں جماعتوں نے انہیں بیک وقت ایک ہی حلقے سے ٹکٹ جاری کیا ہے۔

اس صورتحال کو جو چیز دلچسپ بناتی ہے وہ یہ ہے کہ میر یعقوب بزنجو نامی اس امیدوار نے ابھی تک مسلم لیگ ن یا پیپلز پارٹی سے الحاق کا باضابطہ اعلان نہیں کیا۔

میر یعقوب بزنجو قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 259 سے الیکشن لڑ رہے ہیں جس میں بلوچستان کے مکران ڈویژن کے اضلاع کیچ اور گوادر شامل ہیں۔

ابتدائی طور پر، مسلم لیگ (ن) نے بزنجو کو گوادر اور اس کے اطراف کے علاقوں پر مشتمل این اے 259 کے لیے ٹکٹ دیا تھا۔  ایک ہفتے بعد پیپلز پارٹی نے بھی انہیں اسی حلقے سے اپنا امیدوار قرار دے دیا۔

یعقوب بزنجو کا نام پہلی بار دو ماہ قبل نومبر 2023 میں مسلم لیگ (ن) کے قائد میاں نواز شریف کے دورہ کوئٹہ کے دوران سامنے آیا تھا، جہاں ان کے ساتھ وہ شخصیات بھی تھیں جنہوں نے مسلم لیگ (ن) میں شمولیت اختیار کی تھی۔  تاہم حاصل بزنجو نے اس تقریب میں شرکت نہیں کی اور نہ ہی مسلم لیگ ن سے اپنی وابستگی کی تصدیق کی۔

اس کے باوجود حاصل بزنجو کا نام 3 جنوری کو جاری ہونے والے اعلامیے میں شامل تھا جس پر مسلم لیگ (ن) کے مرکزی الیکشن سیل کے چیئرمین سینیٹر اسحاق ڈار نے دستخط کیے تھے۔  اعلامیے میں بزنجو کو بلوچستان سے قومی اور صوبائی اسمبلی کے 58 امیدواروں میں سے ایک کے طور پر درج کیا گیا ہے۔

اگرچہ مسلم لیگ (ن) نے انہیں قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 259 کے لیے امیدوار نامزد کیا ہے، بزنجو نے اپنے ایک سوشل میڈیا بیان میں عوامی طور پر مسلم لیگ (ن) کا ٹکٹ قبول کرنے سے انکار کر دیا ہے۔

7 روز قبل پیپلز پارٹی نے باضابطہ اعلان کرتے ہوئے بلوچستان سے قومی اور صوبائی اسمبلی کے امیدواروں کی ابتدائی فہرست جاری کی تھی۔  ان میں ملک شاہ گرگیج کو این اے 259 کیچ کم گوادر سے امیدوار منتخب کیا گیا۔  تاہم 10 جنوری کو تبدیلی آئی کیونکہ اس حلقے سے ملک شاہ گرگیج کی بجائے یعقوب بزنجو کو امیدوار قرار دیا گیا تھا۔

پیپلز پارٹی بلوچستان کے سیکرٹری جنرل سابق سینیٹر روزی خان کاکڑ کے مطابق اس حلقے سے ابتدائی طور پر ملک شاہ گرگیج کو امیدوار منتخب کیا گیا تھا۔  تاہم ملک شاہ سے مشاورت کے بعد پارٹی قیادت نے اپنا فیصلہ تبدیل کرتے ہوئے یعقوب بزنجو کو ٹکٹ جاری کر دیا۔