مسلم لیگ (ن) نے استحکام پاکستان پارٹی کے ساتھ کن حلقوں میں سیٹ ایڈجسٹمنٹ کرنے پے تیار ہے

مسلم لیگ (ن) نے استحکام پاکستان پارٹی
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

مسلم لیگ (ن) نے استحکام پاکستان پارٹی کے ساتھ کن حلقوں میں سیٹ ایڈجسٹمنٹ کرنے پے تیار ہے

مسلم لیگ (ن) نے استحکام پاکستان پارٹی
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

 

مسلم لیگ (ن) اور استحکام پاکستان پارٹی (آئی پی پی) کے درمیان سیٹ ایڈجسٹمنٹ کے معاملے کا حل واضح ہو گیا ہے، لیکن اس انتظام میں کچھ قابل ذکر غیر حاضریاں ہیں۔  فردوس عاشق اعوان، فرخ حبیب، رانا نذیر اور نوریز شکور اس ایڈجسٹمنٹ میں شامل نہیں ہیں۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق آئی پی پی نے مسلم لیگ نون کے ساتھ ایڈجسٹمنٹ کے لیے ابتدائی طور پر قومی اسمبلی کی 13 اور صوبائی اسمبلی کی 22 نشستوں کا مطالبہ کیا تھا۔  تاہم آئی پی پی کو قومی اسمبلی کی 7 اور صوبائی اسمبلی کی 22 نشستیں الاٹ کی گئی ہیں۔  اس کے علاوہ 11 سیٹیں دی جا رہی ہیں۔

مسلم لیگ نون ان نشستوں پر اپنے امیدوار کھڑے نہیں کرے گی اور پاکستان پارٹی کے امیدواروں کی حمایت کے لیے اپنے کارکنوں کو بھی متحرک کرے گی۔  اس کے بدلے میں استحکام پاکستان پارٹی باقی تمام قومی اور صوبائی نشستوں پر مسلم لیگ ن کے امیدواروں کی حمایت کرے گی۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق مسلم لیگ ن لودھراں کے بجائے این اے 149 ملتان سے نون جہانگیر ترین کو نشست دینے پر رضامند ہے جب کہ علیم خان کو این اے 117 اور عون چوہدری کو این اے 128 لاہور سے ٹکٹ دیا جائے گا۔

علاوہ ازیں مسلم لیگ ساہیوال سے نون نعمان لنگڑیال، خوشاب سے انجینئر گل اصغر، اسلام آباد سے عامر کیانی اور پنڈی سے غلام سرور خان کی حمایت کرے گی۔  تاہم آئی پی پی کی فردوس عاشق اعوان، ہمایوں اختر، رانا نذیر، فیصل آباد سے فرخ حبیب اور ساہیوال سے نوریز شکور کو جگہ نہیں دی جائے گی۔