حسینہ واجد 50 فیصد سے زائد نشستیں حاصل کر کے پانچویں بار بنگلہ دیش کی وزیر اعظم بنے گئ

حسینہ واجد
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

حسینہ واجد 50 فیصد سے زائد نشستیں حاصل کر کے پانچویں بار بنگلہ دیش کی وزیر اعظم بنے گئ

 

حسینہ واجد
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

 

بنگلہ دیش کی وزیر اعظم حسینہ واجد نے حالیہ انتخابات میں کامیابی حاصل کر کے ملک کی سربراہ کے طور پر اپنی پانچویں مدت حاصل کی۔

تاہم اپوزیشن کے بائیکاٹ کی وجہ سے ووٹرز کا ٹرن آؤٹ نمایاں طور پر کم رہا۔  الیکشن کمیشن کے ترجمان نے تصدیق کی کہ حسینہ واجد کی عوامی لیگ 50 فیصد سے زائد نشستیں حاصل کرنے میں کامیاب رہی۔

بائیکاٹ کے باوجود، حزب اختلاف کی سب سے بڑی جماعت بنگلہ دیش نیشنلسٹ پارٹی نے عوام پر زور دیا کہ وہ انتخابی عمل کا بائیکاٹ کریں، جس کے نتیجے میں صرف 40 فیصد ووٹ ڈالے گئے۔

جمہوری عمل میں اعتماد پیدا کرنے کی کوشش میں، 76 سالہ وزیر اعظم نے بنگلہ دیش نیشنلسٹ پارٹی کو دہشت گرد گروپ قرار دیا اور شہریوں سے جمہوری نظام پر اعتماد کرنے کی اپیل کی۔

بنگلہ دیش سے میڈیا رپورٹس بتاتی ہیں کہ حسینہ واجد نے انتخابات میں دو تہائی سے زیادہ نشستیں حاصل کیں۔  سموئے ٹی وی کے مطابق عوامی لیگ نے حسینہ واجد کی قیادت میں 300 میں سے 264 نشستیں حاصل کیں۔ان میں سے عوامی لیگ نے 204 سیٹیں حاصل کیں جبکہ ان کی اتحادی جاٹیہ پارٹی نے 9 نشستیں جیتی۔

قابل ذکر بات یہ ہے کہ بنگلہ دیش کرکٹ کے سابق کپتان اور معروف کھلاڑی شکیب الحسن نے بھی بنگلہ دیش نیشنلسٹ پارٹی کی نمائندگی کرتے ہوئے ایک نشست جیتی۔