جانیۓ الیکشن ٹریبونل نے ریٹرننگ افسران کے فیصلوں کو معطل کر کے کن کن امیدواروں کے کاغذات نامزدگی منظور کر لیے ہے

الیکشن ٹریبونل
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

جانیۓ الیکشن ٹریبونل نے ریٹرننگ افسران کے فیصلوں کو معطل کر کے کن کن امیدواروں کے کاغذات نامزدگی منظور کر لیے ہے

 

الیکشن ٹریبونل
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

 

سندھ الیکشن ٹریبونل نے قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 214 سے شاہ محمود قریشی اور ان کے بیٹے زین قریشی کے کاغذات نامزدگی مسترد کرنے کا فیصلہ کالعدم قرار دے دیا۔  جس کے نتیجے میں شاہ محمود قریشی کو این اے 214 عمرکوٹ سے الیکشن لڑنے کی اجازت مل گئی ہے اور اسی حلقے سے زین قریشی کے کاغذات نامزدگی بھی منظور کر لیے گئے ہیں۔

اس کے علاوہ یاسر الدین اور عمران علی کی اپیل بھی منظور کر لی گئی ہے۔  الیکشن ٹربیونل نے پی ٹی آئی کے متعدد رہنماؤں کے کاغذات نامزدگی کی منظوری بھی دے دی ہے جن میں عمر ایوب، نعیم پنجوٹھا، عاطف خان، بابر نواز، مجاہد علی، عبدالسلام آفریدی، عدنان خان اور میاں محمد عمر شامل ہیں۔  شیخ رشید شفیق، زلفی بخاری، عمر تنویر بٹ، مہرین آصف، قاضی اکبر اور شہناز بیگم جیسے دیگر امیدواروں کو بھی الیکشن لڑنے کی اجازت دی گئی ہے۔

تاہم پی پی 19 کے خلاف تحریک انصاف کے سابق ایم پی اے عارف عباسی کی اپیل مسترد کر دی گئی ہے۔  خیبرپختونخوا میں الیکشن ٹربیونل نے شوکت یوسفزئی، محمود جان، شہرام ترکئی، افتخار مشوانی، عاطف خان، عبدالسلام، عامر فرزند اور مجاہد خان سمیت 40 امیدواروں کے کاغذات نامزدگی منظور کر لیے۔  ایبٹ آباد میں مسلم لیگ (ن) کے قائد نواز شریف کے کاغذات نامزدگی سے متعلق اعتراض پر سماعت 8 جنوری تک ملتوی کر دی گئی، دریں اثناء ارکان پارلیمنٹ کی اہلیت سے متعلق کیس اس وقت سپریم کورٹ میں زیر سماعت ہے، اور ہم انتظار کر رہے ہیں۔

عدالت کا فیصلہ.  اسلام آباد ہائی کورٹ کے الیکشن ٹریبونل نے ایک مثبت نوٹ پر اسلام آباد کے تین حلقوں این اے 46، 47 اور 48 سے تمام امیدواروں کے کاغذات نامزدگی منظور کر لیے ہیں۔  علاوہ ازیں این اے 163 سے شوکت بسرا اور ان کی اہلیہ کے کاغذات نامزدگی بھی الیکشن ٹربیونل نے منظور کر لیے ہیں۔

اپیلٹ ٹربیونل نے حلقہ این اے 119 سے مسلم لیگ (ن) کی سینئر نائب صدر مریم نواز کے کاغذات نامزدگی کی منظوری کے خلاف درخواست سے متعلق ریٹرننگ افسران سے جواب طلب کر لیا، گزشتہ روز ٹربیونل نے ریٹرننگ افسر کو نوٹسز جاری کیے تھے۔  قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 132 سے کاغذات نامزدگی کی منظوری کے خلاف اپیل کے حوالے سے…

اس کے علاوہ اپیلٹ ٹربیونل نے مسلم لیگ (ن) کے صدر شہباز شریف کے کاغذات نامزدگی کی منظوری اور تحریک لبیک کے رہنما حماد اظہر کے کاغذات مسترد کیے جانے کے خلاف درخواست پر آر اوز سے بھی جواب طلب کر لیا۔  -انصاف  مزید برآں، الیکشن ٹربیونل نے پاکستان تحریک انصاف کے رہنما اعظم سواتی کی اپیل خارج کر دی، جنہوں نے این اے 15 سے ان کے کاغذات نامزدگی مسترد کیے جانے کو چیلنج کیا تھا۔

ادھر لاہور ہائیکورٹ نے جمشید چیمہ اور مسرت چیمہ کے کاغذات نامزدگی مسترد ہونے سے متعلق انتخابی اپیلوں پر سماعت کی۔  دوسری جانب اسلام آباد ہائی کورٹ نے استحکام پاکستان پارٹی کے سینئر رہنما ڈاکٹر محمد امجد کے کاغذات نامزدگی منظور کر لیے۔

اس کے برعکس الیکشن ٹربیونل نے قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 59 اور پی پی 23 تلہ گڑھ سے چوہدری پرویز الٰہی کے کاغذات نامزدگی مسترد ہونے کے خلاف اپیل کی سماعت مقرر کر دی ہے۔  متعلقہ ریٹرننگ افسران کو مطلع کر دیا گیا ہے اور سماعت 6 جنوری کو ہو گی۔

فیصل آباد میں اپیلٹ ٹربیونل نے مسترد شدہ کاغذات نامزدگی کے خلاف 80 اپیلوں کے حوالے سے ریٹرننگ افسران کو نوٹس جاری کر دیئے۔  مزید برآں، A124 کے لیے اسسٹنٹ ریٹرننگ آفیسر میں تبدیلی کی گئی ہے، گورنمنٹ سپیشل ایجوکیشن سنٹر راوی ٹاؤن لاہور کے ہیڈ مسٹریس رفیق اسحاق کو نیا اسسٹنٹ ریٹرننگ آفیسر مقرر کیا گیا ہے۔

لاہور ہائیکورٹ کے ملتان بنچ پر قائم الیکشن ٹربیونلز نے سابق گورنر ملک غلام مصطفی کھر اور ان کی اہلیہ سمیت 13 امیدواروں کی اپیلیں منظور کرتے ہوئے انہیں الیکشن میں حصہ لینے کی اجازت دے
دی۔

اسلام آباد میں الیکشن ٹریبونل نے پی ٹی آئی رہنما سید ظفر علی شاہ کو پراپرٹی ٹیکس کے واجبات پیر تک نمٹانے کی ہدایت کی ہے۔  اسی طرح سندھ ہائی کورٹ کے الیکشن ٹربیونل نے ذوالفقار مرزا کے صاحبزادوں حسنین مرزا اور حسام مرزا سے متعلق ریٹرننگ افسر کے فیصلے کے خلاف اپیل کے نوٹس جاری کردیئے ہیں۔

الیکشن ٹربیونل 1 کے جسٹس ہاشم کاکڑ نے پی بی 18 اور پی بی 35 سے ظفر زہری، پی بی 41 سے جہانگیر خان، پی بی 46 سے جمشید الرحمان اور پی بی 40 اور پی بی 41 سے جعفر خان کو جمعیت علمائے اسلام کے امیدوار نامزد کیا ہے۔  تاہم سماعت کے بعد پی بی 43 سے امیدوار محمد حیات اور امیدوار نور محمد کو الیکشن لڑنے کی اجازت دے دی گئی۔

الیکشن ٹریبونل نے جہلم کے حلقہ این اے 60 اور 61 سے فواد چوہدری کے کاغذات نامزدگی سے متعلق اپیلوں کی سماعت کی۔  فواد چوہدری کے غیر ملکی دوروں پر اعتراضات اٹھائے گئے، کیونکہ انہوں نے کاغذات نامزدگی میں ناکافی تفصیلات فراہم کی تھیں۔  الیکشن ٹریبونل نے ایف آئی اے سے فواد چوہدری کے غیر ملکی دوروں سے متعلق مزید معلومات فراہم کرنے کی استدعا کی۔  الیکشن ٹربیونل کے جج جسٹس چوہدری عبدالعزیز نے کیس کی سماعت کل تک ملتوی کر دی۔

جج ارشاد حسین شاہ نے تحریک انصاف کے پی ایس 24 کے امیدوار گوہر خان کے خلاف دائر درخواست کی سماعت کی۔  وکلا نے دلائل دیے اور معزز عدالت نے کیس کی سماعت 9 جنوری تک ملتوی کر دی۔لاہور ہائی کورٹ کے اپیلٹ ٹربیونل نے سوشل میڈیا کے کاغذات نامزدگی مسترد ہونے کے خلاف اپیل پر متعلقہ آر اوز کو آج نوٹس جاری کرتے ہوئے ریکارڈ سمیت طلب کر لیا ہے۔  میڈیا ایکٹیوسٹ صنم جاوید۔

سردار خرم لطیف کھوسہ کے کاغذات نامزدگی مسترد ہونے کے خلاف اپیل پر آر او کو نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب طلب کر لیا گیا۔  این اے 109 میں شیخ وقاص اکرم کے کاغذات نامزدگی منظور کر لیے گئے، صاحبزادہ محبوب سلطان کے کاغذات نامزدگی اپیل سماعت کے لیے منظور کر لیے گئے۔  پشاور ہائی کورٹ پشاور الیکشن ٹربیونل کے جج جسٹس عتیق شاہ نے نوشہرہ تحریک انصاف کے ضلعی صدر پرویز خٹک کے خلاف صوبائی اسمبلی پی کے 88 سے امیدوار میاں محمد عمر کاکاخیل کی اپیل پر الیکشن میں حصہ لینے کی اجازت دے دی۔