سرکاری ملازمین کے بچوں کو کوٹے پر بھرتی کرنے پر چیف جسٹس برہم

سرکاری ملازمین کے بچوں کو کوٹے پر بھرتی
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

سرکاری ملازمین کے بچوں کو کوٹے پر بھرتی کرنے پر چیف جسٹس برہم

 

سرکاری ملازمین کے بچوں کو کوٹے پر بھرتی
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

 

سرکاری ملازمین کے بچوں کو کوٹے پر بھرتی کرنے پر سپریم کورٹ میں تشویش کا اظہار کیا گیا ہے۔

جنرل پوسٹ آفس اسلام آباد میں بھرتیوں سے متعلق کیس کی سماعت کے دوران چیف جسٹس نے اس پالیسی پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ یہ آئین کے منافی ہے اور صرف سرکاری ملازمین کو فائدہ ہوتا ہے۔

انہوں نے سوال کیا کہ سرکاری ملازمین کے بچوں کو ملازمت کے مواقع کیوں دیئے جاتے ہیں جبکہ دوسروں کو نہیں؟  ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے عدالت کو بتایا کہ یہ پالیسی پچھلی حکومت نے نافذ کی تھی، جس پر چیف جسٹس نے اس بات پر زور دیتے ہوئے کہا کہ آئین کو حکومت کے کسی بھی فیصلوں پر ہمیشہ ترجیح دینی چاہیے۔

چیف جسٹس نے مزید کہا کہ اس پالیسی کو ختم کیا جائے کیونکہ آئین سپریم اختیار رکھتا ہے۔  ان مباحث کی روشنی میں ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے حکومت سے اس معاملے پر رہنمائی حاصل کرنے کی درخواست کی۔