لاہور میں قومی اسمبلی کے حلقوں کی ٹکٹوں کی تقسیم مسلم لیگ (ن) کے بڑے رہنما ٹکٹ سے محروم

مسلم لیگ (ن)
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

لاہور میں قومی اسمبلی کے حلقوں کی ٹکٹوں کی تقسیم مسلم لیگ (ن) کے بڑے رہنما ٹکٹ سے محروم

 

مسلم لیگ (ن)
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

 

مسلم لیگ (ن) نے لاہور میں اپنی ہی سیاسی صفوں میں ایک بڑی ہلچل مچا دی ہے جس کے نتیجے میں سابق سپیکر قومی اسمبلی ایاز صادق سمیت کئی اہم رہنماؤں کو قومی اسمبلی کے ٹکٹ ملنے سے باہر کر دیا گیا ہے۔

مسلم لیگ ن نے لاہور کی 14 میں سے 12 قومی اسمبلی کی نشستوں کے لیے امیدواروں کی فہرست کو حتمی شکل دے دی ہے۔  تاہم ان کی کوششوں کے باوجود نصیر بھٹہ اور سابق ایم این اے وحید عالم خان پارٹی قیادت کو قائل کرنے میں ناکام رہے ہیں۔

قیادت نے سردار ایاز صادق، رانا مشہود، میاں مرغوب احمد اور رانا مبشر کو ٹکٹ نہ دینے کا فیصلہ کیا ہے۔  تاہم امکان ہے کہ ایاز صادق کو سینیٹ یا ضمنی انتخاب کے لیے ٹکٹ کی پیشکش کی جا سکتی ہے۔

قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 117 میں استحکام پارٹی کے ساتھ ممکنہ سیٹ ایڈجسٹمنٹ کے باعث آئی پی پی کے صدر علیم خان اور مسلم لیگ ن کے ملک ریاض کے درمیان کوئی فیصلہ نہیں ہو سکا۔  ایسے میں مسلم لیگ ن کے اپنے ہی امیدوار الیکشن لڑیں گے۔

شارٹ لسٹ کیے گئے امیدواروں میں قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 118 سے حمزہ شہباز، این اے 119 سے مریم نواز اور این اے 120 سے سہیل شوکت بٹ شاٹ شامل ہیں۔

مسلم لیگ ن کے دیگر ممکنہ امیدواروں میں این اے 121 سے شیخ روحیل اصغر، این اے 122 سے خواجہ سعد رفیق، این اے 123 سے شہباز شریف اور این اے 127 سے عطا تارڑ شامل ہیں۔  چیئرمین بلاول بھٹو نے بھی اپنے کاغذات جمع کرائے ہیں جس سے دونوں جماعتوں کے درمیان ممکنہ طور پر سخت مقابلے کا عندیہ ہے۔

این اے 128 سے حافظ نعمان اور این اے 129 سے مہر اشتیاق اس وقت مسلم لیگ ن کے امیدوار بننے کی دوڑ میں سب سے آگے ہیں جب کہ امکان ہے کہ قائد نواز شریف خود این اے 130 سے ​​الیکشن لڑیں گے۔

آئی پی پی کے ساتھ سیٹ ایڈجسٹمنٹ نہ ہونے کی صورت میں این اے 117 سے ملک ریاض اور این اے 124 سے رانا مبشر اقبال ن لیگ کے امیدوار ہوں گے۔