پاک فوج کے خلاف سوشل میڈیا پر منفی پروپیگنڈہ کرنے پر 10 سال قید کی سزا، سینیٹ میں بل منظور

پاک فوج
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

پاک فوج کے خلاف سوشل میڈیا پر منفی پروپیگنڈہ کرنے پر 10 سال قید کی سزا، سینیٹ میں بل منظور

 

پاک فوج
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

 

پاکستان کی سینیٹ نے حال ہی میں اکثریتی ووٹ سے ایک قرارداد منظور کی ہے، جس میں ایسے افراد کے لیے سخت سزائیں تجویز کی گئی ہیں جو سوشل میڈیا پر پاک فوج کے خلاف ‘منفی پروپیگنڈہ’ کرتے ہیں۔

پاکستان پیپلز پارٹی کے خیبر پختونخوا سے تعلق رکھنے والے سینیٹر بہرامند تنگی کی طرف سے پیش کی گئی قرارداد میں ‘فوج مخالف پروپیگنڈے’ کے حوالے سے سخت سزا دینے کی ضرورت پر زور دیا گیا ہے۔

یہ مسلح افواج اور دفاعی اداروں کی دہشت گردی سے نمٹنے اور ملکی سرحدوں کی حفاظت میں دی گئی نمایاں قربانیوں کا اعتراف کرتا ہے۔  قرارداد میں مختلف سوشل میڈیا پلیٹ فارمز پر مسلح افواج اور سیکیورٹی ایجنسیوں کو نشانہ بنانے والے منفی اور بدنیتی پر مبنی مواد کے پھیلاؤ پر گہری تشویش کا اظہار کیا گیا ہے۔

نتیجتاً، سینیٹ نے حکومت پر زور دیا ہے کہ وہ اس مسئلے کو حل کرنے اور مسلح افواج اور دیگر سیکیورٹی اداروں کے خلاف اس طرح کے نقصان دہ پروپیگنڈے کو پھیلانے میں ملوث افراد کو روکنے کے لیے ضروری اقدامات کرے، جس میں عوامی عہدے سے 10 سال کی نااہلی بھی شامل ہے۔

یہ بات قابل غور ہے کہ اس سے قبل سینیٹ اور قومی اسمبلی دونوں سے اسی طرح کی قراردادیں اور بل منظور ہو چکے ہیں۔  اپریل 2021 میں، سابق وزیر اعظم عمران خان کی حکومت کی قیادت میں قومی اسمبلی نے ایک بل منظور کیا جس میں سوشل میڈیا پر فوج پر تنقید کرنے والے افراد کے لیے دو سال قید کی تجویز ہے۔