سال 2023 پاکستان میں جمہوریت کے لیے کیسا رہا پلڈاٹ نے رپورٹ جاری کر دی

پلڈاٹ
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

سال 2023 پاکستان میں جمہوریت کے لیے کیسا رہا پلڈاٹ نے رپورٹ جاری کر دی

 

پلڈاٹ
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

2023 میں پاکستان میں جمہوریت کی حالت پر پلڈاٹ کی حالیہ رپورٹ ملک کے جمہوری نظام کے لیے ایک اور چیلنجنگ سال پر روشنی ڈالتی ہے۔  بین الاقوامی تھنک ٹینکس نے یہاں تک کہ پاکستان کو انتخابی آمریت کا نام دیا ہے۔

رپورٹ میں سابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی طرح پی ٹی آئی کے بانی کی نااہلی پر روشنی ڈالی گئی ہے۔  تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان کو 9 مئی کے واقعات کے حوالے سے اہم الزامات کا سامنا ہے۔  مزید برآں، الیکشن کمیشن نے پی ٹی آئی کو ایک اور دھچکا لگا کر ان کے نشان بلے کو منسوخ کر دیا۔

قانونی لڑائیوں کے باوجود رپورٹ میں انکشاف کیا گیا ہے کہ 90 دن کی مقررہ مدت میں انتخابات نہیں کرائے جا سکے۔  نگراں حکومتوں کی طویل حکمرانی کو غیر آئینی سمجھا جاتا ہے اور یہ جمہوریت کے جوہر کے خلاف ہے۔

پلڈاٹ کی رپورٹ میں 2018 کے مقابلے میں کاغذات نامزدگی جمع کرانے والے امیدواروں کی تعداد میں 30 فیصد اضافے پر بھی روشنی ڈالی گئی ہے۔ جب کہ مختلف شہروں میں کاغذات نامزدگی چھیننے کی اطلاعات ہیں، امیدواروں کے کاغذات جمع نہ کروانے کی کوئی مثال نہیں ہے۔

مزید برآں، رپورٹ میں نشاندہی کی گئی ہے کہ قومی اسمبلی نے یا تو ایگزیکٹو دباؤ کے تحت یا بین الاقوامی ذمہ داریوں کو پورا کرنے کے لیے قانون سازی کی۔  اس سے قانون ساز ادارے کی آزادی اور خود مختاری کے بارے میں تشویش پیدا ہوتی ہے