اسرائیل کی چھ اسلامی ممالک کے خلاف جنگ شروع کرنے کی دھمکی

اسرائیل
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

اسرائیل کی چھ اسلامی ممالک کے خلاف جنگ شروع کرنے کی دھمکی

 

اسرائیل
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

 

اسرائیل کے وزیر دفاع یو گیلنٹ نے منگل کو پارلیمنٹ سے خطاب کرتے ہوئے متعدد اسلامی ممالک کے خلاف کثیر محاذ جنگ میں ملک کی ممکنہ شمولیت کے بارے میں خبردار کیا۔

انہوں نے زور دے کر کہا کہ اسرائیل اس وقت غزہ، لبنان، شام، عراق، یمن، ایران اور غرب اردن کے ساتھ تنازعات میں مصروف ہے۔  گیلنٹ نے مشرق وسطیٰ میں وسیع فوجی کارروائیوں کے امکان کی طرف اشارہ کیا، غزہ میں جاری لڑائی خطے میں کشیدگی کو بڑھا رہی ہے۔

کینیڈا کا سٹارٹ اپ ویزا پروگرام کیا ہے اور اور اسے کون لوگ اپلائی کر سکتے ہیں

انہوں نے مزید تفصیلات فراہم کرنے سے گریز کرتے ہوئے کہا کہ اسرائیل پہلے ہی ان چھ محاذوں پر جوابی کارروائی کر چکا ہے۔  قابل ذکر بات یہ ہے کہ ایرانی حمایت یافتہ جنگجو گروپوں نے مشرق وسطیٰ کے مختلف حصوں میں اسرائیلی اور امریکی فوجی تنصیبات کو نشانہ بنایا ہے۔

یہ بات اجاگر کرنا ضروری ہے کہ 7 اکتوبر کو حماس کے حملے کے جواب میں اسرائیلی فوج کی کارروائیوں کے نتیجے میں 20,600 سے زائد فلسطینی جانیں گنوا چکے ہیں اور 55,000 سے زیادہ زخمی ہوئے ہیں۔  مزید برآں، فلسطینی آبادی کا 85 فیصد، جو کل 2.3 ملین افراد ہیں، اپنے گھروں سے بے گھر ہو چکے ہیں۔

دسمبر کے اوائل میں سات روزہ جنگ بندی کی میعاد ختم ہونے کے بعد سے 41 کلومیٹر طویل اور 12 کلومیٹر چوڑے غزہ کی پٹی میں تنازعہ کی شدت میں اضافہ ہوا ہے جس کے نتیجے میں فلسطینیوں کی ہلاکتوں میں مزید اضافہ ہوا ہے۔  منگل کے روز، غزہ کی وزارت صحت نے 24 گھنٹوں کے دوران 241 فلسطینیوں کی ہلاکت اور 382 کے زخمی ہونے کی اطلاع دی، جن میں سے 70 فیصد متاثرین خواتین اور بچے تھے۔

بھارت 23 سالوں میں ایک میزائل بنانے میں ناکام، لائیو ٹیسٹ کے دوران 43 فیصد میزائل لانچ ہونے میں ناکام

اسرائیلی وزیر دفاع کا یہ بیان ایک ایسے وقت میں سامنے آیا ہے جب حماس اور اسرائیلی فوج کے درمیان تنازع اسرائیل اور غزہ کی سرحدوں سے باہر پھیلتا ہوا دکھائی دے رہا ہے۔  دریں اثنا، بحیرہ احمر میں ایرانی حمایت یافتہ حوثی ملیشیا نے تجارتی بحری جہازوں پر اپنے حملے تیز کر دیے ہیں، کنٹینر جہاز پر حملے اور اسرائیل پر ڈرون حملے کی کوشش کی ذمہ داری قبول کر لی ہے۔

حوثی ملیشیا کے بڑھتے ہوئے حملوں کے جواب میں، امریکہ نے بحیرہ احمر میں تیل اور مال بردار بحری جہازوں کے گزرنے کی حفاظت کے لیے 12 سے زائد ممالک کا اتحاد تشکیل دیا ہے۔امریکہ نے عراق میں حزب اللہ کے بعض ٹھکانوں کو نشانہ بنایا ہے۔

غزہ میں جاری لڑائی اب نئے محاذوں کی تلاش میں ہے۔  بھارت کے دارالحکومت نئی دہلی میں اسرائیلی سفارت خانے کے قریب دھماکہ ہوا۔  بھارت اور اسرائیل کے حکام واقعے کی تحقیقات کر رہے ہیں۔  دھماکے کی جگہ سے انتقام کی دھمکی والا خط بھی ملا ہے۔  دھماکے میں ملوث ہونے کے شبے میں 2 افراد کو حراست میں لے لیا گیا ہے۔

اسرائیل کے وزیراعظم بنجمن نیتن یاہو نے امریکا اور یورپ کے دباؤ کے باوجود جنگ روکنے کا کوئی عندیہ نہیں دیا اور کہا کہ اہداف اور مقاصد کے حصول تک جنگ جاری رکھی جائے گی۔