جانیے سال 2023 میں کراچی میں آتشزدگی کے کتنے واقعات ہوے اور کتنی قیمتی جانیں چلی گئی

کراچی میں آتشزدگی
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

جانیے سال 2023 میں کراچی میں آتشزدگی کے کتنے واقعات ہوے اور کتنی قیمتی جانیں چلی گئی

 

کراچی میں آتشزدگی
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

 

اس سال کراچی میں آتشزدگی کے کل 2,164 واقعات پیش آئے، جن میں سے تین خاص طور پر شدید نوعیت کے تھے، جس کے لیے شہر بھر میں فائر ٹینڈرز کی تعیناتی کی ضرورت تھی۔  ان واقعات کو تیسرے درجے کی آگ کے طور پر درجہ بندی کیا گیا تھا، جس کے نتیجے میں 41 جانوں کا المناک نقصان ہوا۔  بدقسمتی سے، ان تشویشناک اعدادو شمار کے باوجود، صورتحال سے نمٹنے کے لیے کوئی قابل ذکر اقدامات نہیں کیے گئے۔

ریکارڈ کے مطابق جنوری اور فروری کے مہینوں میں بالترتیب 5 اور 2 جانیں ضائع ہوئیں۔  اپریل میں یہ تعداد بڑھ کر 6 ہو گئی اور مئی اور جون میں ہر ماہ ایک جان چلی گئی۔  تاہم یہ خوش قسمتی ہے کہ مارچ اور جولائی میں کوئی جانی نقصان نہیں ہوا۔  اگست میں آتشزدگی کے واقعات میں 4، ستمبر میں 3 اور اکتوبر میں ایک جان لی گئی۔

نومبر کو سال کا سب سے تباہ کن آتشزدگی کا واقعہ قرار دیا گیا، جس کے نتیجے میں 11 جانوں کا المناک نقصان ہوا۔  علاوہ ازیں 6 دسمبر کو عائشہ منزل کے عرشی مال میں آتشزدگی سے 5 جانیں ضائع ہوئیں۔  مزید برآں، نیو کراچی فیکٹری میں لگنے والی آگ پر قابو پاتے ہوئے چار فائر فائٹرز اپنی جان کی بازی ہار گئے۔  مجموعی طور پر اس سال مجموعی طور پر 98 افراد آگ سے متعلقہ زخمیوں سے متاثر ہوئے۔

آتشزدگی کے واقعات میں خاطر خواہ اضافے کے باوجود انتظامیہ اور محکمہ فائر بریگیڈ نے صورتحال کو بہتر بنانے کے لیے سنجیدہ عزم کا مظاہرہ نہ کرنا افسوسناک ہے۔  سنگین حالات میں پاکستان نیوی اور کے پی ٹی سے مدد لینی پڑتی ہے۔