خوشخبری انڈس موٹرز نے پاکستان کی پہلی ہائبرڈ الیکٹرک کار تیار کر لی

انڈس موٹرز
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

خوشخبری انڈس موٹرز نے پاکستان کی پہلی ہائبرڈ الیکٹرک کار تیار کر لی

 

انڈس موٹرز
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

 

انڈس موٹرز نے پاکستان میں تیار ہونے والی پہلی ہائبرڈ الیکٹرک کار کی باضابطہ نقاب کشائی کر دی ہے۔  یہ تعارف اسلام آباد میں منعقدہ ساتویں سالانہ جرنلسٹ آٹو سمٹ میں ہوا، جہاں انڈس موٹرز نے مقامی طور پر بنائی گئی پہلی ہائبرڈ گاڑی کی نمائش کی۔

انڈس موٹرز کے سی ای او نے اپنے بیان میں روشنی ڈالی کہ 1800cc ہائبرڈ کرولا کراس پاکستان میں 50 فیصد مقامی ترقی کی پیداوار ہے۔  انہوں نے یہ بھی بتایا کہ پاکستان میں مکمل طور پر الیکٹرک گاڑی تیار کرنے میں تقریباً تین سال لگیں گے۔

ایک اہم پیش رفت میں، پاکستان میں 31 کمپنیوں نے ای موٹر سائیکلوں کے لائسنس حاصل کر لیے ہیں۔  ابتدائی مرحلے میں ملک بھر میں الیکٹرک موٹر سائیکلوں کو تیزی سے متعارف کرایا جائے گا۔

انڈس موٹرز کے سی ای او اصغر علی جمالی نے اس بات پر زور دیا کہ گاڑیوں کی برآمدات کو آسان بنانے کے لیے آٹو پالیسی 2021-2026 کے تحت کوششیں شروع کر دی گئی ہیں۔  مختلف ممالک کے ساتھ ترجیحی تجارتی معاہدوں کے لیے جاری مذاکرات کا مقصد گاڑیوں کی برآمدات کو بڑھانا ہے۔

انہوں نے مزید تسلیم کیا کہ پاکستان میں گاڑیوں پر عائد اعلیٰ حکومتی ٹیکس ان کی مہنگی قیمتوں میں حصہ ڈالتے ہیں۔  مختلف ماڈلز کو 35% سے 57% تک ٹیکس کی شرح کا سامنا ہے۔  مزید برآں، ملک میں ڈرائیور کے بغیر گاڑیاں متعارف کرانے میں بھی چیلنجز ہیں۔

انڈس موٹرز کے سی ای او نے اظہار کیا کہ آٹو سیکٹر کو اس وقت درپیش بحران پر قابو پانے کے لیے مزید دو سال درکار ہیں۔  تاہم، امید ہے کہ اگلے سال سے گاڑیوں کی پیداوار اور فروخت میں اضافہ دیکھا جائے گا۔