الیکشن میں خواجہ سرا بھی پیچھے نہ رہے جانیے کس حلقے سے کاغذات نامزدگی جمع کروائے

خواجہ سرا
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

الیکشن میں خواجہ سرا بھی پیچھے نہ رہے جانیے کس حلقے سے کاغذات نامزدگی جمع کروائے

 

خواجہ سرا
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

 

اسلام آباد اور پشاور میں آئندہ انتخابات کے لیے دو نامور خواجہ سرا امیدواروں نے کاغذات نامزدگی جمع کرا دیے۔  نایاب علی نے قومی اسمبلی کی نشست این اے 47 جبکہ صوبیہ خان نے خیبرپختونخوا کی صوبائی اسمبلی کی نشست کے پی 18 کے لیے کاغذات نامزدگی جمع کرائے ہیں۔

گزشتہ عام انتخابات 2018 کے دوران ملک بھر میں صرف ایک خواجہ سرا امیدوار نے حصہ لیا تھا۔  تاہم، اس بار، صوبیہ خان، جنہوں نے نہ صرف بیچلر کی ڈگری حاصل کی ہے بلکہ خیبرپختونخوا میں پہلی ٹرانس جینڈر ریڈیو جوکی ہونے کا اعزاز بھی حاصل کیا ہے، وہ الیکشن لڑیں گی۔  وہ پہلے ہی بڑے جوش اور لگن کے ساتھ اپنی مہم شروع کر چکی ہے۔

صوبیہ خان نے اپنے حلقوں بالخصوص خواتین اور بچوں کے حقوق کے لیے انتھک محنت کرنے کا عہد کیا۔  دوسری جانب این اے 47 اسلام آباد سے امیدوار نایاب علی نے روشنی ڈالی کہ اسلام آباد کے 1.1 ملین ووٹرز میں سے 500,000 خواتین ہیں۔  انہوں نے خواتین اور کچی آبادیوں کے رہائشیوں کے حقوق کی وکالت کرنے کے اپنے عزم پر زور دیا۔

پچھلے انتخابات میں، ماریہ، ایک خواجہ سرا، خیبر پختونخواہ سے آزاد امیدوار کے طور پر حصہ لیا اور 536 ووٹ حاصل کیے، جو خواتین امیدواروں کو ملنے والے ووٹوں سے زیادہ تھے۔