عمران خان اور شاہ محمود قریشی کے لیے سپریم کورٹ سے بڑا ریلیف, ضمانت منظور ہو گئ

عمران خان اور شاہ محمود قریشی
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

عمران خان اور شاہ محمود قریشی کے لیے سپریم کورٹ سے بڑا ریلیف, ضمانت منظور ہو گئ

 

عمران خان اور شاہ محمود قریشی
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

 

سپریم کورٹ نے عمران خان اور شاہ محمود قریشی کی درخواست ضمانت منظور کرلی۔  قائم مقام چیف جسٹس سردار طارق مسعود، جسٹس منصور علی شاہ اور جسٹس اطہر من اللہ پر مشتمل بنچ اس وقت کیس کی سماعت کر رہا ہے۔

سماعت کے دوران پی ٹی آئی کے وکیل سلمان صفدر نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ سابق وزیراعظم کو کبھی بھی سائفر کے خفیہ کوڈز تک رسائی نہیں تھی۔  جسٹس اطہر من اللہ نے نشاندہی کی کہ وزارت خارجہ خارجہ پالیسی کے مقاصد کے لیے حکومت کو سائفر فراہم کرتی ہے، جب کہ جسٹس منصور نے اس بات پر زور دیا کہ آفیشل سیکرٹ ایکٹ کا مقصد سفارتی معاملات سمیت حساس معلومات کے افشاء کو روکنا ہے۔

کیا عمران خان اور باقی پی ٹی ائی رہنما جیل سے الیکشن لڑ سکیں گے۔جانیے اس سے پہلے پاکستان میں کتنے رہنماؤں نے جیل سے الیکشن لڑا ہے

سلمان صفدر کا مزید کہنا تھا کہ انتہائی حساس دستاویز سمجھے جانے والے سائفر کو امریکا میں پاکستانی سفیر نے بھیجا تھا۔  جسٹس منصور علی شاہ نے استفسار کیا کہ کیا حساس معلومات بالکل شیئر کی جائیں؟

پی ٹی آئی کی نمائندگی کرنے والے وکیل نے دلیل دی کہ اس بات کا تعین کرنے کی ضرورت ہے کہ آیا واقعی حساس معلومات شیئر کی گئی ہیں، اور سابق وزیر اعظم کو سزائے موت یا عمر قید جیسی سخت سزاؤں کا سامنا نہیں کرنا چاہیے۔

قائم مقام چیف جسٹس نے واضح کیا کہ سائفر کسی کے ساتھ شیئر نہیں کیا گیا بلکہ اسے عوامی طور پر نشر کیا گیا۔  سلمان صفدر نے عدالت کو بتایا کہ وزارت خارجہ کی جانب سے سائفر اعظم خان کو موصول ہوا اور الزام لگایا کہ 28 مارچ 2022 کو ایک میٹنگ ہوئی تھی جس میں سائفر کی سازش کی گئی تھی۔

جسٹس اطہر من اللہ نے روشنی ڈالی کہ اصل سیفر وزارت خارجہ میں رکھا گیا ہے، اگر اسے باہر لے جایا گیا تو یہ دفتر خارجہ کا جرم ہوگا۔  انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ عوام میں سائفر پر بحث کرنا جائز نہیں ہے۔

سلمان صفدر نے بتایا کہ شاہ محمود قریشی نے اپنی تقریر میں وزیراعظم کو سازش سے آگاہ کرنے کا دعویٰ کیا۔  قریشی یہ بیان دینے کے بعد 125 دن سے جیل میں ہیں، کیونکہ وہ اپنے حلف کے پابند ہیں۔
پی ٹی آئی کی نمائندگی کرنے والے وکیل سلمان صفدر نے سابق وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کی 27 مارچ 2022 کو سپریم کورٹ میں پریڈ گراؤنڈ میں کی گئی تقریر بھی پیش کی۔

قائم مقام چیف جسٹس سردار طارق مسعود نے تسلیم کیا کہ وزیر خارجہ خود باخبر اور آگاہ ہیں کہ کیا کہنا ہے اور کیا نہیں کہنا۔  اس بات کو مدنظر رکھتے ہوئے کہ دونوں جماعتیں صورت حال سے آگاہ ہیں، شاہ محمود نے خود پی ٹی آئی کے بانی کے حوالے سے بات کرنے کا انتخاب کیا۔

عمران خان کتنے حلقوں اور کہاں سے الیکشن لڑیں گے بیرسٹر گوہر نے بتا دیا

سلمان صفدر نے زور دے کر کہا کہ پی ٹی آئی کے بانی نے عوام سے کوئی معلومات شیئر نہیں کیں۔  اگر سائفر کو پہلے ہی عام کر دیا گیا ہے، تو استغاثہ کو سائفر کے لیے بند کمرے میں ٹرائل کی ضرورت کیوں ہے؟  جسٹس اطہر من اللہ نے استغاثہ سے سوال کیا کہ کس بنیاد پر ملزم کو حراست میں رکھنا ضروری ہے۔