مریم نواز اور لیگی خواتین رہنماؤں میں تلخ کلامی، نواز شریف کو مداخلت کرنا پڑی

مریم نواز اور لیگی خواتین رہنماؤں میں تلخ کلامی
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

مریم نواز اور لیگی خواتین رہنماؤں میں تلخ کلامی، نواز شریف کو مداخلت کرنا پڑی

مریم نواز اور لیگی خواتین رہنماؤں میں تلخ کلامی
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

 

گزشتہ روز مسلم لیگ ن کے پارلیمانی بورڈ نے خواتین کے انٹرویوز کیے جس کے دوران مسلم لیگ ن کی سینئر نائب صدر اور چیف آرگنائزر مریم نواز نے مریم اورنگزیب، عظمیٰ بخاری اور حنا پرویز بٹ کو شاباش دی۔

عمران خان کتنے حلقوں اور کہاں سے الیکشن لڑیں گے بیرسٹر گوہر نے بتا دیا

بتایا گیا ہے کہ حنا پرویز بٹ کی تعریف پر کچھ لیگی کارکنان ناراض ہوگئے جس کے باعث خواتین امیدواروں اور اعلیٰ قیادت کے درمیان محاذ آرائی شروع ہوگئی۔  سینئر رہنما تہمینہ دولتانہ اور مدیحہ نیازی کی بھی مریم نواز سے جھڑپ ہوئی۔  خواتین رہنماؤں نے اپنے عدم اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ میک اپ اور برانڈڈ کپڑے پہننے سے پارٹی کاز میں کوئی حصہ نہیں آتا۔

ذرائع نے انکشاف کیا ہے کہ لاہور سے تعلق رکھنے والی لیگی کارکن مدیحہ نیازی نے براہ راست نواز شریف کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ میاں صاحب ہم کسی کے بھانجے اور بھانجے نہیں ہیں، ہماری کوئی سفارش نہیں ہے جس کی وجہ سے ہماری آواز کو نظر انداز کیا جا رہا ہے۔  دیگر خواتین امیدواروں نے تالیاں بجا کر مدیحہ نیازی کے بیان کی حمایت کی۔

ذرائع کے مطابق مدیحہ نیازی نے اس بات پر زور دیا کہ حقیقی اہلیت اور قربانیاں دینے والی خواتین کی کامیابیوں کو دبایا جا رہا ہے۔  جواب میں مریم نواز نے مدیحہ نیازی کے تحفظات سن کر بیٹھنے کی درخواست کی۔  تاہم مدیحہ نیازی نے مضبوطی سے کہا کہ وہ بیٹھ کر اپنی قربانیوں پر سمجھوتہ کرنے نہیں آئیں۔  اس نے اپنے وعدوں کو پورا کرنے کا عہد کیا، چاہے اس کا مطلب پارٹی سے نکال دیا جائے۔

مسلم لیگ ن نے قومی اسمبلی کے ٹکٹوں کے امیدواروں کی فہرست جاری کردی۔جانیے کس کو کس حلقے کا ٹکٹ ملا

ذرائع کا یہ بھی کہنا ہے کہ ملاقات کے دوران مریم نواز اور سینئر لیگی رہنما تہمینہ دولتانہ کے درمیان تلخ جملوں کا تبادلہ ہوا۔  تہمینہ دولتانہ نے اپنے علاقے میں اپنی کامیابیوں پر روشنی ڈالی، جس پر مریم نواز نے مداخلت کرتے ہوئے پارٹی میں ان کے کردار پر سوال اٹھایا۔  اس سے تہمینہ دولتانہ ناراض ہوگئیں، جنہوں نے کہا کہ مریم نواز صرف اس وقت ان کی کوششوں کی تعریف کریں گی جب وہ زندہ نہیں رہیں گی۔

کشیدہ صورتحال سے نمٹنے کے لیے مسلم لیگ ن کے قائد نواز شریف نے مداخلت کی اور پارٹی میں خواتین کی طاقت کا اعتراف کیا۔  انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ پارٹی کی ترقی ان کی لگن کی وجہ سے ہوئی ہے اور میٹنگ میں موجود قائدین اپنے عہدے ان کے مرہون منت ہیں۔  انہوں نے ان کی قربانیوں پر ان کا احترام اور شکریہ ادا کیا۔