عثمان ڈار اور ان کی والدہ کے بیان پر خواجہ آصف نے خاموشی توڑ دی

عثمان ڈار اور ان کی والدہ کے بیان پر خواجہ آصف
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

عثمان ڈار اور ان کی والدہ کے بیان پر خواجہ آصف نے خاموشی توڑ دی

عثمان ڈار اور ان کی والدہ کے بیان پر خواجہ آصف
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

 

عثمان ڈار اور ان کی والدہ کے بیان پر خواجہ آصف نے ٹوئٹر پر اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ وفا میری سیاسی شناخت کا محور ہے۔  میں نے ہمیشہ اپنے مخالفین کے ساتھ اصولی سیاسی جنگ لڑی ہے، کبھی ذاتی انتقام کا سہارا نہیں لیا۔

انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ وہ اپنے مخالفین کے بزرگوں اور خاندانوں کا احترام کرتے ہوئے اصولوں کی بنیاد پر لڑتے ہیں۔  مشرف اور عمرانی دور میں انہیں دو بار چھ ماہ کے لیے ناحق قید کیا گیا۔  اس کے باوجود اس نے اپنی قیادت کو برقرار رکھا اور اپنے تعلقات کی سالمیت کو برقرار رکھا۔

خواجہ آصف نے انکشاف کیا کہ ان کے سیاسی مخالفین نے ان کی اہلیہ اور بیٹے کے خلاف من گھڑت مقدمات بنائے اور انہیں متعدد عدالتوں میں پیش کیا۔  اس کا خاندان ناحق حملوں کا نشانہ بن گیا۔

انہوں نے سوال کیا کہ وہ اپنے آپ کو ان لوگوں کی بددیانتی سے کیسے بچا سکتے ہیں جو کبھی حامی تھے، اب ٹیلی ویژن پر اپنے سابق رہنما کے خلاف گواہ بن جاتے ہیں۔  ایسی غدارانہ سیاست ان کے لیے قابل نفرت ہے۔

خواجہ آصف نے اس بات پر زور دیا کہ انہوں نے پریس کانفرنس کے دوران اپنے مخالف کو بہن کہہ کر اس رشتے کے تقدس کے لیے انتہائی احترام کو اجاگر کیا۔  خاندانی رشتے اور رشتے نسلوں پر محیط ہیں۔  وہ اس حقیر سیاست کی مذمت کرتا ہے جو اسے اپنے خاندان کی روایات اور اقدار سے سمجھوتہ کرنے پر مجبور کرتی ہے۔

دریں اثنا، پنجاب پولیس نے عثمان کی والدہ کے ساتھ بدسلوکی کے الزامات کو مسترد کر دیا ہے۔

۔