جانیے پیٹرول کی قیمت کم ہونے کے باوجود کون سی اشیاء کی قیمتیں کم نہیں ہوئیں

پیٹرول کی قیمت کم ہونے
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

جانیے پیٹرول کی قیمت کم ہونے کے باوجود کون سی اشیاء کی قیمتیں کم نہیں ہوئیں

 

پیٹرول کی قیمت کم ہونے
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

 

پاکستان میں پیٹرول کی قیمتوں میں اضافے کا اثر مختلف اشیائے ضروریہ جیسے پھلوں، سبزیوں، گوشت، دودھ اور پبلک ٹرانسپورٹ کے کرایوں پر پڑتا ہے۔

تاہم پیٹرول کی قیمت کم ہونے کے باوجود ان اشیائے ضروریہ کی قیمتوں میں کوئی خاص کمی نہیں ہوتی۔  حال ہی میں نگراں حکومت نے پیٹرول کی قیمت میں 14 روپے فی لیٹر کمی کی ہے جس کے نتیجے میں بس اور ویگن کے کرایوں میں معمولی کمی ہوئی ہے۔  بدقسمتی سے دیگر اشیائے خوردونوش کی قیمتوں کے ساتھ ساتھ ٹرین اور ہوائی کرایوں پر بھی کوئی اثر نہیں پڑا۔

سامان کی گاڑیوں اور ٹرانسپورٹیشن سروسز نے بھی اپنے کرایوں میں کوئی تبدیلی نہیں دیکھی ہے۔  کچھ ٹرانسپورٹرز کا کہنا ہے کہ چونکہ پیٹرول کی قیمتیں زیادہ ہونے پر انہوں نے کرایوں میں اضافہ نہیں کیا تھا، اس لیے پیٹرول کی قیمتیں کم ہونے پر کرایوں میں کمی کی ضرورت نہیں ہے۔  اس کے باوجود بسوں کے کرایوں میں 5 سے 8 فیصد اور شہری پبلک ٹرانسپورٹ کے کرایوں میں 10 فیصد تک کچھ کمی کی گئی ہے۔

مثال کے طور پر موٹروے کے ذریعے اسلام آباد سے لاہور تک بس کا کرایہ 2700 سے کم ہو کر 2600 روپے ہو گیا ہے اور اسلام آباد سے کراچی کا کرایہ 6500 سے کم ہو کر 6000 روپے ہو گیا ہے۔  ان ایڈجسٹمنٹ کے باوجود سبزیوں، پھلوں اور دیگر اشیائے خوردونوش کی قیمتوں میں کمی دیکھنے میں نہیں آئی۔  خریدار اپنے تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے کہتے ہیں کہ اگر یہ اشیاء پٹرول مہنگی ہونے کی وجہ سے مہنگی ہو جاتی ہیں تو پٹرول کی قیمتیں کم ہونے پر یہ بھی سستی ہو جائیں۔

دارالحکومت اسلام آباد میں زندہ مرغیوں کی قیمت 400 روپے فی کلو تک بڑھ گئی،انڈے 390 روپے میں فروخت ہو رہے ہیں۔  جڑواں شہروں میں دودھ فروشوں کا کہنا ہے کہ وہ دودھ کی قیمتیں کم نہیں کر سکتے، چاہے اسے 220 روپے فی کلو فروخت کیا جائے، کیونکہ اس سے نقصان ہوگا۔  اس لیے دودھ اور دہی کی قیمتوں میں کمی کی کوئی گنجائش نظر نہیں آتی۔

راولپنڈی اور اسلام آباد سے اشیائے خوردونوش ملک کے دیگر حصوں تک پہنچانے والی کمپنیوں نے کہا ہے کہ مال بردار گاڑیاں ڈیزل پر چلتی ہیں۔  تاہم، ڈیزل کی قیمتوں میں کمی صرف 13.50 روپے ہے، جو کرایوں میں کمی کی ضمانت دینے کے لیے کافی اہم نہیں ہے۔

دال اور چاول کی ذخیرہ اندوزی اور اسمگلنگ کے خلاف اٹھائے گئے اقدامات کی وجہ سے گزشتہ چار ماہ میں چاول اور دال کی قیمتوں میں 15 سے 25 فیصد تک کمی آئی ہے۔  پیٹرول کی قیمتوں میں حالیہ کمی کے باوجود اشیائے خوردونوش کی قیمتوں میں کمی ممکن نہیں۔

غور طلب ہے کہ پٹرول کی قیمتوں میں کمی سے ایئر لائن اور ٹرین ٹکٹ کی قیمت پر کوئی اثر نہیں پڑا ہے۔  ٹریول ایجنٹس اور ایئر ٹکٹنگ کے کاروبار کے ماہرین کا ماننا ہے کہ پیٹرول کی قیمت کا ایئر ٹکٹ کی قیمتوں پر کوئی اثر نہیں پڑتا۔