کس کے کہنے پہ ان کے ساتھ جیل میں برا سلوک کیا گیا شیر افضل مروت نے سچ بتا دیا

شیر افضل مروت
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

کس کے کہنے پہ ان کے ساتھ جیل میں برا سلوک کیا گیا شیر افضل مروت نے سچ بتا دیا

شیر افضل مروت
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

 

اے آر وائی نیوز کے پروگرام الیونتھ آور میں شیر افضل مروت نے بتایا کہ انہیں لاہور ہائی کورٹ کے کنونشن میں مدعو کیا گیا تھا۔  اس کے ساتھیوں نے اسے گیٹ پر پولیس کی بھاری موجودگی کے بارے میں مطلع کیا، اور اسے وارنٹ کے بارے میں پوچھ گچھ کرنے کا اشارہ کیا۔  اس کے بعد افسر نے اسے بتایا کہ اسے گرفتار کیا جانا ہے۔

مزید خبریں پڑھیں

عمران خان اور اسد عمر ایک بڑے مقدمے میں بری ہو گے

شیر افضل مروت کے مطابق بعد میں پتہ چلا کہ ڈپٹی کمشنر نے انہیں 3 ایم پی او (مینٹیننس آف پبلک آرڈر) کے تحت گرفتار کیا تھا اور مریم نواز کے کہنے پر جیل میں ان کے ساتھ ناروا سلوک کیا گیا۔

شیر افضل مروت نے مزید انکشاف کیا کہ ڈپٹی کمشنر نے لکھا تھا کہ افنان اللہ پر تشدد کے بعد پی ٹی آئی کا ایک ملازم کے پی سے پنجاب پہنچا تھا۔  رہائی کے آخری دن بالآخر انہیں ایک میٹرس فراہم کیا گیا۔

مزید برآں، شیر افضل مروت نے بتایا کہ ذیابیطس ہونے کے باوجود جیل میں انہیں کوئی دوا نہیں دی گئی۔  اس سے جیل کے عملے کے ساتھ تصادم ہوا، جس کے نتیجے میں وہ بھوک ہڑتال پر چلے گئے۔  اس احتجاج کے بعد ہی اسے کمبل ملا۔  یہ نوٹ کرنا ضروری ہے کہ اس نے جمعرات کو بھوک ہڑتال شروع کی تھی، ایک غیر قانونی حکم کے جواب میں جس کی وجہ سے ان کی گرفتاری ہوئی تھی۔

مزید خبریں پڑھیں

عمران خان کا عوام اور پارٹی کارکنوں کے لیے اہم پیغام