نگراں حکومت کا بیرون ملک روزگار کے مواقع تلاش کرنے والوں کیلے انقلابی اقدام

بیرون ملک روزگار کے مواقع
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

نگراں حکومت کا بیرون ملک روزگار کے مواقع تلاش کرنے والوں کیلے انقلابی اقدام

بیرون ملک روزگار کے مواقع
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

 

نگراں حکومت کا بیرون ملک روزگار کے مواقع تلاش کرنے والوں کیلے چھ نئے تحفظاتی دفاتر کے قیام کا اعلان کیا ہے۔  اس اقدام کا مقصد بیرون ملک مقیم پاکستانی شہریوں کے لیے روزگار کے مواقع پیدا کرنا ہے۔

مزید برآں، افراد کے لیے شناختی کارڈ یا ڈومیسائل کے طور پر اسی شہر سے تحفظ حاصل کرنے کی شرط کو ختم کر دیا گیا ہے۔  اس کا مطلب یہ ہے کہ افراد اب ملک بھر میں کسی بھی محافظ دفتر تک رسائی حاصل کر سکتے ہیں۔

نئے دفاتر سکھر، ایبٹ آباد، گوادر، آزاد جموں و کشمیر، اسلام آباد اور گلگت بلتستان میں قائم ہوں گے۔  ان دفاتر کے اضافے کے ساتھ، حفاظتی دفاتر کی کل تعداد 15 تک پہنچ جائے گی۔ اس توسیع سے بیرون ملک ملازمت کے متلاشیوں، خاص طور پر دور دراز علاقوں میں رہنے والوں کی رسائی میں کافی اضافہ ہوگا۔

اس وقت کراچی، لاہور، پشاور، راولپنڈی، کوئٹہ، ملتان، مالاکنڈ، ڈی جی خان اور سیالکوٹ میں حفاظتی دفاتر پہلے ہی کام کر رہے ہیں۔

اس سے پہلے، تحفظات حاصل کرنے والے افراد کو ان کے شناختی کارڈ یا ڈومیسائل پر اشارہ کے مطابق اپنے شہر کے اندر دفتر میں درخواست دینے کی ضرورت تھی۔  یہ اکثر مسائل اور تاخیر کا باعث بنتا ہے، خاص طور پر ان لوگوں کے لیے جو ان دفاتر سے دور رہتے ہیں۔

اس پابندی کو ہٹانے کا فیصلہ بیرون ملک ملازمت کے متلاشیوں کے لیے زیادہ لچک اور آزادی فراہم کرتا ہے۔  وہ اب پاکستان بھر میں کسی بھی سہولت سے واقع پروٹیکٹوریٹ آف امیگرنٹس کے دفتر کا دورہ کر سکتے ہیں، چاہے ان کی اصل جگہ کچھ بھی ہو۔

یہ اقدامات نگران حکومت کے بیرون ملک کام کرنے والے پاکستانی شہریوں کی فلاح و بہبود کے لیے تعاون کے عزم کی عکاسی کرتے ہیں۔  حکومت کا مقصد تحفظ حاصل کرنے اور خدمات تک رسائی کو بڑھانے کے عمل کو آسان بنا کر بیرون ملک روزگار کے مواقع تلاش کرنے والے افراد کو بااختیار بنانا ہے۔