ایوان صدر سے جاری کردہ کرمنل ترمیمی آرڈیننس 2023 کیا ہے اور یہ کن لوگوں پر لاگو ہو گا

ایوان صدر سے جاری کردہ کرمنل ترمیمی آرڈیننس 2023 کیا ہے اور یہ کن لوگوں پر لاگو ہو گا

کرمنل ترمیمی آرڈیننس 2023
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

 

فوجداری قانون ترمیمی آرڈیننس 2023، جیسا کہ ایوان صدر کے پریس ونگ نے کہا، کا مقصد پاکستان پینل کوڈ 1860 کی دفعہ 462 (O) میں ترمیم کرنا ہے۔

اس سے قبل، بجلی کی تقسیم کار کمپنیوں کو بجلی چوری کے واقعات کی ایف آئی آر درج کرنے میں چیلنجز کا سامنا کرنا پڑتا تھا۔  تاہم نئے آرڈیننس کے نفاذ کے بعد اب بجلی چوری کے واقعات قابل سزا جرم تصور کیے جائیں گے۔

اس آرڈیننس کے تحت نہ صرف گریڈ 17 یا اس سے اوپر کے افسران بلکہ بجلی کی تقسیم کار کمپنیوں کے سی ای اوز کے نامزد کردہ افراد کو بھی بجلی چوری کے واقعات کے خلاف کارروائی کا اختیار حاصل ہو گا۔

صدر مملکت نے آئین کے آرٹیکل 89-1 کے مطابق یہ آرڈیننس جاری کیا۔  توقع ہے کہ اس کا نفاذ توانائی کے شعبے میں بجلی کی چوری سے نمٹنے میں اہم کردار ادا کرے گا، جس کی مالیت تقریباً 590 ارب روپے ہے۔