سعودی عرب حکومت نے عمرہ زائرین کو بڑا ریلیف دے دیا

سعودی عرب حکومت نے عمرہ زائرین کو بڑا ریلیف
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

سعودی عرب حکومت نے عمرہ زائرین کو بڑا ریلیف دے دیا

سعودی عرب حکومت نے عمرہ زائرین کو بڑا ریلیف
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

 

سعودی عرب حکومت نے عمرہ زائرین کو بڑا ریلیف دیتے ہوے اعلان کیا ہے کہ اب تمام شہر اور تاریخی مقامات حجاج کرام کے لیے کھلے ہیں اور ان کی سیر کر سکتے ہیں۔  اس سے قبل عمرہ کے لیے جانے والوں کو صرف مکہ اور مدینہ جانے کی اجازت تھی۔

تاہم، نئی سیاحتی پالیسی کے ساتھ، عمرہ زائرین اب سعودی عرب میں کسی بھی جگہ حج اور سیاحت دونوں مقاصد کے لیے، خاص طور پر اسلامی تاریخ کے اہم مقامات کا سفر کر سکتے ہیں۔  مزید برآں، نئی پالیسی میں محرم کے بغیر عمرے کو بھی فروغ دیا گیا ہے۔

اس بات کو یقینی بنانے کے لیے کہ عوام کو اس نئی پیشکش کے بارے میں اچھی طرح سے آگاہ کیا جائے، سعودی حکومت ہندوستان میں نجی ٹور آپریٹرز اور ٹریول ایجنٹس کے ساتھ تعاون کر رہی ہے جو عمرہ کرنے میں لوگوں کی مدد کریں گے۔

ان ایجنٹوں کو سعودی عرب کی نئی پالیسیوں اور سہولیات سے روشناس کرانے کے لیے سعودی حکومت کی جانب سے سانتا کروز ایسٹ کے گرینڈ حیات ہوٹل میں ‘نسک روڈ شو’ کے نام سے ایک بین الاقوامی پروگرام کا انعقاد کیا گیا۔

اس پروگرام میں شرکت کے لیے ملک کی مختلف ریاستوں سے پرائیویٹ ٹور آپریٹرز کو مدعو کیا گیا تھا۔  تقریب کے دوران حج و عمرہ کے وزیر ڈاکٹر توفیق بن فوزان الربیعہ کو بھی پرائیویٹ ٹور آپریٹرز سے ملاقات کا موقع ملا۔

پروگرام نے ٹریول ایجنٹس کو سعودی عرب میں متعدد کمپنیوں کے نمائندوں سے براہ راست بات چیت کرنے کا موقع فراہم کیا۔  ان نمائندوں نے نہ صرف سعودی عرب میں عازمین حج کے لیے دستیاب نئی سہولیات کے بارے میں تفصیلات بتائیں بلکہ پیشکشوں کی نمائش کے لیے ایک جامع ‘پاور پوائنٹ پریزنٹیشن’ بھی کی۔

اس پروگرام میں شامل کمپنیوں میں سعودی عرب میں ایئر لائن ٹکٹنگ، ہوٹل، بس سروسز، بینک اور موبائل نیٹ ورک فراہم کرنے والی کمپنیاں شامل تھیں۔

مارکیٹ آفرنگ مینیجر امل الحربی نے سعودی عرب میں تفریحی اور سیاحتی سہولیات اور پرکشش مقامات کے بارے میں تفصیلی معلومات فراہم کیں۔

اس میں دیکھنے کے لیے دلچسپ مقامات، سفر کے اختیارات، اور مزیدار مقامی کھانوں کی دستیابی کے بارے میں سفارشات شامل تھیں۔  یہاں تک کہ زائرین ایک مخصوص مقام پر مقامی خاندانوں کے ساتھ روایتی سعودی عرب کے کھانے کا تجربہ بھی کر سکتے ہیں۔

مزید برآں، طائف میں ہائیکنگ، کیبل کار، پیرا گلائیڈنگ اور سمندری غوطہ خوری جیسی سہولیات بھی دستیاب ہیں، جو سیاحوں کے لیے اضافی تفریحی مواقع فراہم کرتی ہیں۔