سابق وفاقی وزیر زبیدہ جلال کے 190 ملین پاؤنڈ سکینڈل پر چونکا دینے والے انکشافات

زبیدہ جلال کے 190 ملین پاؤنڈ سکینڈل
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

سابق وفاقی وزیر زبیدہ جلال کے 190 ملین پاؤنڈ سکینڈل پر چونکا دینے والے انکشافات

زبیدہ جلال کے 190 ملین پاؤنڈ سکینڈل
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

 

سابق وفاقی وزیر زبیدہ جلال نے 190 ملین پاؤنڈ سکینڈل پر نیب ٹیم کے سامنے اہم انکشافات کرتے ہوئے کہا ہے کہ کابینہ ارکان نے معاملے کو دیکھنے کا مشورہ دیا تھا۔

رپورٹ میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ کابینہ کے ارکان نے نیب انکوائری میں شمولیت اختیار کی اور اپنا موقف برقرار رکھا لیکن ان کا خیال تھا کہ 190 ملین پاؤنڈز کے معاملے پر پاکستان کو غور کرنا چاہیے۔

نیب ٹیم کو زبیدہ جلال نے بتایا کہ انہوں نے انکوائری کی درخواست کی ہے۔

زبیدہ جلال نے کابینہ میں مؤقف اپنایا تھا کہ 190 ملین پاؤنڈز پاکستان کا حق ہے، یہ رقم واپس پاکستان کو ملنی چاہیئے۔

زبیدہ جلال کے مطابق اس اہم موضوع پر بغیر کسی بحث کے ایجنڈے کو منظور کر لیا گیا اور کابینہ کے ارکان کے شدید اعتراض کے باوجود 190 ملین پاؤنڈز اور این سی اے کا معاملہ منظور کر لیا گیا۔  وزیر اعظم نے اس معاملے پر کسی کی فریاد نہیں سنی۔

مزید برآں، زبیدہ جلال نے انکشاف کیا کہ کابینہ اجلاس کے منٹس کو خفیہ رکھنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔