پاکستان مسلم لیگ (ن) اور استحکام پاکستان پارٹی کے درمیان سیٹ ایڈجسٹ کی اندرونی کہانی

پاکستان مسلم لیگ (ن) اور استحکام پاکستان پارٹی کے درمیان سیٹ ایڈجسٹ
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

پاکستان مسلم لیگ (ن) اور استحکام پاکستان پارٹی کے درمیان سیٹ ایڈجسٹ کی اندرونی کہانی

 

پاکستان مسلم لیگ (ن) اور استحکام پاکستان پارٹی کے درمیان سیٹ ایڈجسٹ
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

 

سیٹ ایڈجسٹمنٹ سے متعلق معاملات پر بات کرنے کے لیے پارٹی رہنماؤں کے درمیان ملاقاتوں کے مزید ہوں گے، کیونکہ پاکستان مسلم لیگ (ن) اور استحکام پاکستان پارٹی (آئی پی پی) دونوں اصولی طور پر ایک معاہدے پر پہنچ چکے ہیں۔

سیاسی پارٹیوں میں جوڑ توڑ کا رجحان زیادہ ہوتا جا رہا ہے اور اس سلسلے میں ایک قابل ذکر پیش رفت مسلم لیگ (ن) کے صدر شہباز شریف اور استحکام پاکستان پارٹی کے سرپرست اعلیٰ جہانگیر ترین کے درمیان ملاقات ہے۔

نون لیگ اور آئی پی پی کے رہنماؤں کے درمیان گزشتہ روز سابق وزیراعظم شہباز شریف کے گھر ماڈل ٹاؤن میں ہونے والی گفتگو مبینہ طور پر پینتالیس منٹ تک جاری رہی۔

اجلاس میں پنجاب کے صدر رانا ثناء اللہ اور ایاز صادق کے علاوہ آئی پی پی رہنما عون چوہدری نے شرکت کی۔جہانگیر ترین اور شہباز شریف نے آئندہ انتخابات کے لیے سیاسی ماحول اور نشستوں کی تقسیم پر بات کی۔

استحکام پاکستان پارٹی اور مسلم لیگ (ن) کے درمیان ملاقات کے دوران دونوں جماعتوں کی نشستوں کو ایڈجسٹ کرنے کا اصولی معاہدہ ہوا۔  دونوں جماعتوں کے رہنما مستقبل کے اجلاسوں میں کاغذی کارروائی پر تبادلہ خیال کریں گے تاکہ یہ طے کیا جا سکے کہ کتنی سیٹوں کو ایڈجسٹ کیا جائے گا۔