جنگ سے پہلے حماس کی چال اسرائیلی اسٹاک ایکسچینج سے اربوں ڈالر حاصل کما لیے

جنگ سے پہلے حماس کی چال اسرائیلی اسٹاک ایکسچینج

جنگ سے پہلے حماس کی چال اسرائیلی اسٹاک ایکسچینج سے اربوں ڈالر حاصل کما لیے

 

جنگ سے پہلے حماس کی چال اسرائیلی اسٹاک ایکسچینج

 

حماس نے 7 اکتوبر کے بم دھماکوں سے قبل اسرائیلی اسٹاک ایکسچینج سے اربوں ڈالر حاصل کیے تھے۔ دعویٰ کیا گیا ہے کہ حماس سے تعلق رکھنے والے سرمایہ کاروں نے اسرائیلی اسٹاک ایکسچینج سے اربوں ڈالر کا فائدہ اٹھایا۔

شارٹ سیلنگ کے ذریعے حماس سے منسلک سرمایہ کاروں نے اربوں ڈالر کمائے۔

کولمبیا یونیورسٹی اور واشنگٹن، نیویارک سے حاصل کردہ معلومات سے پتہ چلتا ہے کہ 67 صفحات پر مشتمل ایک مطالعاتی مقالہ شائع کیا گیا تھا۔  اس میں کہا گیا ہے کہ اسرائیل کے سب سے بڑے بینک کے 4.4 ملین شیئرز ایک سرمایہ کار نے فروخت کیے تھے۔

مطالعاتی مقالے میں کہا گیا ہے کہ جن سرمایہ کاروں نے اسرائیلی بینک کے حصص کو کم کیا ان کو 900 ملین ڈالر کا فائدہ ہوا۔  227,000 حصص جنگ سے پانچ دن پہلے ایک قیاس آرائی کے ذریعہ کم کیے گئے تھے۔

مطالعاتی مقالے میں کہا گیا ہے کہ اس بات کا بہت زیادہ امکان نہیں ہے کہ تصادم سے پانچ دن پہلے ہونے والی اہم شارٹ سیلنگ صرف ایک حادثہ تھا۔

اسرائیلی روزنامے کا دعویٰ ہے کہ حماس کے کچھ ارکان ذہین کاروباری ہیں۔  ایسا لگتا ہے کہ حماس اہم شارٹ سیلنگ کی ذمہ دار تھی۔