آئی ایم ایف کا دباؤ حکومت کا 20 لاکھ افراد کو ٹیکس کے نظام میں شامل کرنے کا منصوبہ

فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

آئی ایم ایف کا دباؤ حکومت کا 20 لاکھ افراد کو ٹیکس کے نظام میں شامل کرنے کا منصوبہ

 

 

فوٹو بشکریہ گوگل امیجز
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

 

حکومت نے آئی ایم ایف کی طرف سے عائد کردہ اضافی 20 لاکھ افراد کو ٹیکس کے نظام میں شامل کرنے کی ضرورت پر عملدرآمد میں تیزی لائی ہے۔  چیئرمین نادرا لیفٹیننٹ جنرل محمد منیر افسر کی سربراہی میں ایک آٹھ رکنی اعلیٰ سطحی تکنیکی گروپ تشکیل دیا گیا ہے جو ایف بی آر کے ٹیکس بیس کو وسیع کرنے اور آئی ٹی انفراسٹرکچر کی تبدیلی کے منصوبے کو آگے بڑھانے کے لیے تشکیل دیا گیا ہے۔

حکومت کی تشکیل کردہ کمیٹی کا نوٹیفکیشن بھی جاری کر دیا گیا ہے۔  اس میں کہا گیا ہے کہ کمیٹی ڈیٹا کے انضمام اور ایف بی آر کے منصوبے پر عملدرآمد کے لیے ایک ماہ میں قواعد اور سفارشات بنائے گی جس سے ٹیکس کی بنیاد وسیع ہو گی۔

فیڈرل بورڈ آف ریونیو کی جانب سے ہائی لیول ٹیکنیکل کمیٹی اور اس کے رولز اینڈ ریگولیشنز (ٹی او آر) کی تشکیل کا سرکلر بھی جاری کر دیا گیا ہے۔

فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر) کے ممبر ان لینڈ ریونیو آپریشنز میر بادشاہ خان وزیر، ممبر انفارمیشن ٹیکنالوجی ڈاکٹر ناصر خان، ممبر ڈیجیٹل انیشیٹوز ایف بی۔  آر کرامت اللہ خان چوہدری، ممبر چیف پراجیکٹس آفیسر گوہر احمد خان، نادرا ہیڈ آف ڈیپارٹمنٹ آف این ڈی ڈبلیو سید مشیر حسین، ایف بی آر کے چیف انفارمیشن ٹیکنالوجی زین العابدین ساہی اور پاکستان ریونیو آٹومیشن لمیٹڈ (پی آر اے ایل) کے چیف ایگزیکٹو آفیسر آٹھ ممبران میں شامل ہیں۔  سرکلر کے مطابق کمیٹی کے چیئرمین چیئرمین نادرا ہوں گے ان میں عامر ملک بھی شامل ہیں۔

  ایف بی آر کے ٹیکسز کی توسیع، آئی ٹی انفراسٹرکچر ٹرانسفارمیشن پلان میں کہا گیا ہے کہ تکنیکی کمیٹی ڈیٹا انٹیگریشن کے لیے سفارشات اور اقدامات کا مسودہ تیار کرے گی۔  یہ معلومات ٹی او آر میں موجود ہے۔  اسی طرح، یہ ٹیکس کی بنیاد کو وسیع کرنے کے لیے ایف بی آر کے اقدام پر عملدرآمد کے بارے میں تجاویز اور سفارشات کا مسودہ تیار کرے گا۔

  ریلیز میں کہا گیا ہے کہ یہ تکنیکی گروپ فیڈرل بورڈ آف ریونیو کے آئی ٹی انفراسٹرکچر کا بھی جائزہ لے گا اور ایف بی آر کے ای ٹی کے انفراسٹرکچر کی تبدیلی اور اپ گریڈیشن کے منصوبے کے حوالے سے سفارشات پیش کرے گا۔

  دستاویز میں کہا گیا ہے کہ کمیٹی پاکستان ریونیو آٹومیشن لمیٹڈ (PRAL) کے لیے تجاویز بھی پیش کرے گی، جو کہ FBR کا ایک ذیلی ادارہ ہے، جس کی تنظیم نو کی جائے تاکہ ایک جدید ترین آئی ٹی کاروبار بن سکے۔  مزید برآں، یہ مصنوعی ذہانت کے ساتھ ریاضیاتی ماڈلنگ اور ڈیٹا اینالیٹکس بنائے گا۔

  ٹاسک فورس متعلقہ اسٹیک ہولڈرز کے ساتھ ملاقات کرنے کا ارادہ رکھتی ہے تاکہ ٹاسک آرڈر کی رپورٹس میں بیان کردہ ڈومینز سے متعلق سفارشات اور خیالات مرتب کریں۔  اس کے علاوہ، ٹاسک فورس کسی بھی فرد کو مدد کے لیے قبول کر سکتی ہے، اور ضرورت کی بنیاد پر اتفاق رائے سے کسی بھی ماہر کی خدمات کی درخواست کی جا سکتی ہے۔