کامونکی جلسے میں جہانگیر ترین اور علیم خان کے کھل کے عمران خان پہ وار

فوٹو بشکریہ گوگل امیجز
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

کامونکی جلسے میں جہانگیر ترین اور علیم خان کے کھل کے عمران خان پہ وار

فوٹو بشکریہ گوگل امیجز
فوٹو بشکریہ گوگل امیجز

 

استحکام پاکستان پارٹی کے سربراہ جہانگیر ترین کے مطابق پاکستان مسلم لیگ ن لیگ اور آئی پی پی کا نہیں اسٹیبلشمنٹ کا عزیز ہے۔

  آپ اسٹیبلشمنٹ کے عزیز ہیں یا مسلم لیگ ن کے؟  کامونکی کے جلسے سے خطاب سے قبل ایک صحافی نے جہانگیر ترین سے مختصر انٹرویو میں سوال کیا۔  جہانگیر ترین نے جواب میں کہا کہ پاکستان اسٹیبلشمنٹ کا پیارا ہے۔

  مزید برآں، جہانگیر ترین نے رپورٹر کو مشورہ دیا کہ وہ اجلاس کے دوران پہلے لوگوں سے خطاب کریں۔  باقی خود ہی سامنے آ جائیں گے۔

  بعد ازاں جہانگیر ترین نے اسمبلی سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ملک کی تقدیر بدلنی ہے تو پاکستان کی ذمہ داری سب کو اٹھانی ہوگی۔  زراعت پر مرکوز قوم بنائیں گے۔

  استحکام پاکستان پارٹی کے بانی نے اعلان کیا کہ اگرچہ ہم نے ماضی سے بہت کچھ سیکھا ہے، لیکن اب وقت آگیا ہے کہ آگے بڑھیں، تمام بچوں کو مساوی اور اعلیٰ معیار کی تعلیم تک رسائی حاصل ہو، اور یہ کہ ہم بہترین پاکستان بنائیں گے۔

  استحکام پاکستان پارٹی کے صدر عبدالعلیم خان نے کامونکی میں جلسے سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ دس سال کی مسلسل محنت کے بعد ہم نے نیا پاکستان بنانے کے لیے دن رات کام کیا، انہوں نے مزید کہا کہ جب عمران خان وزیر اعظم بنے تو بزدار کو پنجاب لے کر آئے اور خیبرپختونخوا میں گورا وزیراعلیٰ بزدار جیسا بنایا دیا۔

  علیم خان کے مطابق ڈاکوؤں اور چوروں نے ہماری قوم کو تباہ و برباد کر دیا ہے۔  سندھ میں، کتے اور انسانی بچے ایک ہی جگہ سے پا نی پیتے ہے۔

    استحکام پاکستان پارٹی کے صدر کے مطابق فوج نے پی ٹی آئی کا بھرپور ساتھ دیا اور اب جب ہمارے جوان سرحدوں پر قربانیاں دے رہے ہیں تو فوج پر تنقید اور بات کر رہے ہیں، یہی وجہ ہے کہ آج ہمارا ملک جوں کا توں ہے۔  یہ طاقتور ہے کیونکہ پاکستان وہاں موجود ہے جہاں فوج ہے۔